اکبر بگٹی کیس، سابق صدر پرویز مشرف کی گرفتاری

پاکستان کے صوبے بلوچستان میں پولیس نے صوبے کے سابق وزیر اعلیٰ نواب اکبر بُگٹی کے قتل کے مقدمے میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کو باقاعدہ طور پر گرفتار کرلیا ہے۔

بلوچستان پولیس نے انسداد دہشت گردی کی عدالت سے استدعا کی ہے کہ جب تک اکبر بُگٹی قتل کیس کا مقدمہ اسلام آباد یا راولپنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں منتقل کرنے کی درخواست پر کوئی فیصلہ نہیں ہوجاتا اُس وقت تک ملزم کو اُن کے فارم ہاؤس میں ہی رکھا جائے جسے سب جیل قرار دیا گیا ہے۔

اس مقدمے کے تفتیشی افسر سردار خان نے اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج کوثر عباس زیدی کے سامنے ملزم پرویز مشرف کے چودہ دن کے جوڈیشل ریمانڈ کی درخواست کی ہے۔ عدالت کا کہنا تھا کہ پہلے اس بات کو تو واضح کریں کہ ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے یا نہیں۔

عدالت کے حکم پر نواب اکبر بُگٹی قتل کے مقدمے کی تفتیشی ٹیم نے جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کو اس مقدمے میں گرفتار کرلیا ہے۔

واضح رہے کہ اے آئی جی کرائم برانچ کوئٹہ کی سربراہی میں پولیس کی چار رکنی ٹیم بارہ جون کو پرویز مشرف کو گرفتار کرنے کے لیے اسلام آباد پہنچی تھی۔