قدیم مصری مگرمچھ نے ماہرین کو حیران کر دیا

تصویر کے کاپی رائٹ INTERSPECTRAL
Image caption غیرمعمولی دریافت: نیلے رنگ میں لپٹے ہوئے چھوٹے مگرمچھوں کو دیکھا جا سکتا ہے

ڈھائی ہزار سال پرانے ایک حنوط شدہ مگرمچھ نے اس وقت نیدر لینڈز کے ماہرین کو حیران کر دیا جب اس کے نئے سکین سے یہ معلوم ہوا کہ اس کے اندر درجنوں حنوط شدہ مگرمچھ کے بچے بھی موجود ہیں۔

تین میٹر لمبا ممی مگرمچھ 1828 سے نیدر لینڈز کے شہر لائڈن کے نیشنل میوزیم آف اینٹیکس میں موجود ہے اور مصری گیلری میں نمائش کے لیے رکھا گیا ہے۔

ڈی ولکسکرینٹ نیوز ویب سائٹ کے مطابق 1990 میں کیے جانے والے سکین سے معلوم ہوا تھا کہ اصل میں یہ دو لپٹے ہوئے مگر مچھ ہیں لیکن اس وقت یہ معلوم نہیں ہو سکا تھا کہ اس میں کم از کم 47 چھوٹے مگرمچھ بھی موجود ہیں۔

یہ اس وقت معلوم ہوا جب سوئڈن کی ٹیکنالوجی کمپنی انٹرسپیکٹرل نے اس کا 3d سٹی سکین کیا۔

کیوریٹر ڈاکٹر لارا ویئس کا کہنا ہے کہ ’پرانے سکین میں آپ صحیح سے نہیں دیکھ سکتے کہ دیگر مگرمچھ بھی اس کے اندر موجود ہیں اور ہمیں اس کی امید بھی نہیں تھی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ INTERSPECTRAL
Image caption ماہرین کو اس سے پہلے یہ معلوم ہو چکا تھا کہ یہ اصل میں دو جڑے ہوئے مگرمچھ ہیں

میوزیم نے اسے ’غیرمعمولی دریافت‘ قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ چھوٹے اور بڑے مگرمچھ کے استعمال سے موت کے بعد زندگی کے قدیم مصری عقائد جھلکتے ہیں۔

اس سکین کا منصوبہ اصل میں نئی نمائش کی تیاریوں کا حصہ تھا جس میں میوزیم آنے والوں کو مگرمچھ اور مصری عالم پر ’انٹریکٹیو ورچوئل آٹوپسی‘ کی سہولت دینا تھا۔

میوزیم کے مطابق اس سہولت سے یہاں آنے والوں کو یہ موقع فراہم کرنا تھا کہ وہ خود ان کی ہر طے کا تھری ڈی نظارہ کر سکیں۔

لندن کے برٹش میوزیم کے سائندانوں کو 2015 میں یہ معلوم ہوا تھا کہ ایک بڑے حنوط شدہ مگرمچھ کے پشت کے ساتھ 20 نو زائدہ جڑے ہوئے ہیں۔ یہ دریافت بھی سٹی سکین کرنے سے ہی ہوئی تھی جسے 80 سینٹی میٹر کے حصے پر کیا گیا تھا کیونکہ وہ حنوط شدہ مگر مچھ بہت بڑا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ INTERSPECTRAL
Image caption 1990 میں کیے جانے والے سکین سے یہ معلوم نہیں ہو سکا تھا کہ اس میں کم از کم 47 چھوٹے مگر مچھ بھی موجود ہیں

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں