ننھے منے جانوروں کے جذبات کی عکاسی

Wildlife photograph of a gecko by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption چھپکلی کی یہ شرارتی سی تصویر محمد روئم کی پسندیدہ تصویر ہے

انڈونیشیا کے فوٹوگرافر محمد روئم کی جانوروں کے چہروں کی تصاویر خاصی حیران کن ہیں۔

رقص کرتے ہوئے مینڈکوں سے لے کر شرارتی انداز میں چھپکلیاں تک شاید ہی کوئی چیز 28 سالہ محمد روئم کے کیمرے سے بچ پائی ہے۔

محمد روئم ایک پیشہ ور نرس ہیں اور انھوں نے تین سال قبل مشغلے کے طور فوٹوگرافی شروع کی تھی۔

وہ باٹام شہر میں مقیم ہیں اور فارغ اوقات میں وہ جنگلی حیات کا پیچھا کرتے ہیں۔

انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ 'میں کیڑوں کا پیچھا کرتا ہوں تاکہ ان کے چہرے کے تاثرات کو عکس بند کر سکوں۔ بعض اوقات ایک درجن سے زائد تصاویر میں سے صرف ایک اچھے تاثرات والی تصویر سامنے آتی ہے۔ دیگر دنوں میں مجھے کچھ نہیں ملتا۔'

Wildlife photograph of an insect by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption محمد روئم کی بعض تصاویر واقعی کسی دوسری دنیا کی دکھائی دیتی ہیں

محمد روئم کا کہنا ہے کہ 'بہت سے لوگ نہیں جانتے یا ایک جانور کے مخصوص حصوں کی جانب دھیان نہیں دیتے۔ میں ایک خاص حصے کی عکاسی کرنے کی کوشش کرتا ہوں مثال کے طور پر اگر ان کی آنکھیں دیکھیں تو یہ لاجواب ہیں۔'

Close-up of an Iguana's eye by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption درختی چھپکلی کی آنکھ کا منظر - پلک چھپکنے کی دیر ہے اور یہ نظارہ کھو دیں گے
Wildlife photograph of a frog by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption واضح طور پر محمد روئم مینڈکوں کے مداح ہیں
Wildlife photograph of frogs by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption وہ عام طور پر 100ایم ایم کا میکرو لینز استعمال کرتے ہیں لیکن انتہائی قریب کی تصاویر بنانے کے لیے ایم پی ای 65 ایم ایم کا بھی استعمال کرتے ہیں۔
Wildlife photograph of the red & black Mason Wasp (Pachodynerus Erynnis) by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption سرخ اور سیاہی مائل ایک کیڑے کی حیران کن اور واضح تصویر
Wildlife photograph of a dragonfly by Muhammad Roem تصویر کے کاپی رائٹ Muhammad Roem
Image caption ڈریگن فلائی کی اس تصویر میں آپ بارش کے قطروں کو بھی محسوس کر سکتے ہیں

محمد روئم کہتے ہیں کہ 'میں نے اپنے طور پر فوٹوگرافی سیکھنا شروع کی تھی پھر مجھے اپنے ایک استاد اس کا فیڈ بیک ملنا شروع ہوا۔

'میں تصویریں بنانے کے لیے زیادہ تر باٹام میں گھومتا ہوں لیکن جب کبھی وقت ملتا ہے میں انڈونیشیا کے دوسرے علاقوں میں جانے کی کوشش بھی کرتا ہوں۔'

اپنی مصروف زندگی میں انھیں تصاویر بنانے کا بہت کم وقت ملتا ہے لیکن جب وہ تصویریں بناتے ہیں ہر تصویر کی ایڈٹنگ کے لیے ایک ہفتے تک کا وقت صرف کرتے ہیں۔

وہ کہتے ہیں:'ایک تصویر کے لیے میں تقریباً پورا دن لگا دیتا ہوں۔ لیکن تصویر کی مکمل تیاری میں جیسا کہ ایڈٹنگ اور پراسسنگ میں ایک ہفتے تک کا وقت لگ سکتا ہے۔'

تصاویر بشکریہ: محمد روئم

متعلقہ عنوانات