ایچ آئی وی اور ایڈز کے ٹیسٹ کے لیے 'ہوم ٹیسٹ کٹ' قابل اعتبار نہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

برطانیہ میں ادویات کے نگراں ادارے نے خبردار کیا ہے کہ ایچ آئی وی/ ایڈز کے ٹیسٹ کے لیے ہائی ٹاپ کی 'ہوم ٹیسٹ کٹ' کا استعمال ہرگز نہ کریں۔

ادارے نے برطانیہ میں سپلائی کرنے والے دو اداروں کی ایسی تقریباً 114 کٹز کو اپنے قبضے میں لیا ہے جو ناقابل اعتبار نتائج دے سکتی ہیں۔

میڈیسن اور ہیلتھ کیئر ریگولیٹری ایجنسی (ایم ایچ آر اے) کا مشورہ ہے کہ اگر کسی نے ٹیسٹ کے لیے ان کا استعمال کیا ہو تو اسے اپنا ٹیسٹ دوبارہ کروانا چاہیے۔

اس طرح کے ٹیسٹ حکومتی اداروں کے معیار کے مطابق نہیں ہیں۔

یہ ٹیسٹ کِٹز 'چنگڈاؤ ہائی ٹاپ بائیوٹیک کمپنی لمیٹیڈ' کی جانب سے تیار کی گئی ہیں۔

ایم ایچ آر اے سے وابستہ جان ولینکسن کا کہنا ہے 'جو لوگ اپنا ٹیسٹ کرنے کے لیے ایسی کِٹ آن لائن یا بازار سے خریدتے ہیں انھیں اس بات کا علم ہونا چاہیے کہ وہ جو کچھ خرید رہے ہیں وہ ان کے لیے محفوظ اور قابل اعتبار ہو۔'

ان کا مزید کہنا تھا 'اگر آپ کو اس بات کی تشویش ہے کہ آپ نے غلط کِٹ کا استعمال کیا ہے تو آپ کو ڈاکٹر سے یا پھر جنسی امراض کے کلینک یا صحت سے جڑے دیگر پیشہ ور افراد سے بات کرنی چاہیے۔'

ٹیرینس ہگنز ٹرسٹ کے کیری جیمز کا کہنا ہے کہ ایچ آئی وی اور ایس ٹی آئی (جنسی طور پر منتقل شدہ بیماریاں) کے لیے ’ہوم سیلف ٹیسٹ کٹز‘ کے بہت سے فائدے ہیں اور ان سے لوگ اپنے وقت اور شرائط پر خود ہی آسانی سے اپنا ٹیسٹ کر سکتے ہیں۔‘

لیکن ان کا کہنا تھا 'ہمیں اس پر گہری تشویش ہے کہ بازار میں بہت سی ایسی غیر معیاری چیزیں بھری پڑی ہیں جو اصول و ضوابط پر پورا نہیں اترتیں، اس لیے جسے بھی اپنا ٹیسٹ کرنا ہے وہ صرف وہی کِٹ خریدے جو سرکاری طور پر منظور شدہ ہو۔'

ان کے مطابق جس کِٹ پر بھی سرکاری ‎ CE نہ لکھا ہو اس کے استمعال سے آپ اپنی اور دوسروں کی صحت کو خطرے میں ڈال رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں