دنیا کے خشک ترین صحرا میں پھولوں کی بہار

People take pictures of the flowers in the Atacama Desert, Chile, 22 August 2017. تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption سیاحوں کی ایک بڑی تعداد اس نظارے کو دیکھنے کے لیے صحرا میں پہنچی ہے

چلی میں دنیا کے خشک ترین صحرائے ایٹاکاماکے کئی حصوں میں غیر متوقع وافر بارشوں کے نتیجے میں پھولوں کی بہار آ گئی ہے۔

صحرائے ایٹاکاما ہر پانچ سے چھ برس بعد 'پھولوں کا صحرا' بن جاتا ہے جب بارشوں کے نتیجے میں ہر طرف پھول پھوٹنا شروع ہو جاتے ہیں۔

2015 میں پھولوں کی جزوی بہار آئی تھی تاہم اس بار دو برس بعد ہی یہ بہار لوٹ آئی۔

بارشوں کے نتیجے میں صحرا میں پھولوں کی دو سو اقسام اگتی ہیں۔

اس نظارے کو دیکھنے کے لیے ملک بھر سے سیاح اور ماہر نباتيات صحرا کا رخ کرتے ہیں۔

محکمۂ سیاحت کے حکام کا کہنا ہے کہ آنے والے دنوں میں مزید پھول کھلیں گے۔

غیر متوقع شدید بارشوں کے نتیجے میں زیادہ تر خشک سالی کا شکار رہنے والا صحرا ایٹاکاما اب پھولوں کے قالین کا منظر پیش کر رہا ہے

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پھول برف باری کا منظر پیش کر رہے ہیں
تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption زیادہ تر پھولوں کا رنگ سفید ہوتا ہے
تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پیلے رنگ کے پھول بھی دیکھائی دیتے ہیں
تصویر کے کاپی رائٹ EPA
تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption صحرا سال کے زیادہ تر حصوں میں خشک ہتا ہے اور زیادہ سے زیادہ یہاں ریلی کا انعقاد کیا جاتا ہے