نوکری پر آخری دن، امریکی صدر ٹرمپ کا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند کر دیا

ٹرمپ تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption صدر ٹرمپ کا ٹوئٹر اکاؤنٹ 11 منٹ کے لیے بند ہو گیا تھا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جمعرات کو کچھ دیر کے لیے اپنا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند ہونے پر کہا ہے کہ ’ٹوئٹر میں کام کرنے والے ایک شخص نے اپنے طور پر گیارہ منٹ کے لیے میرا اکاؤنٹ غائب کر دیا۔ لگتا ہے کہ دنیا کو اب پتہ چل رہا ہے، اور اثر بھی ہو رہا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER

کمپنی کے مطابق اکاؤنٹ کو کچھ ہی دیر بعد بحال کر دیا گیا تھا۔

ٹوئٹر کمپنی نے اپنی بیان میں کہا کہ کمپنی سے فارغ ہونے والے ایک اہلکار نے اپنی نوکری کے آخری دن صدر ٹرمپ کا اکاؤنٹ @ریئل ڈونلڈ ٹرمپ بند کر دیا تھا۔

صدر ٹرمپ کا اکاؤنٹ 11 منٹ کے لیے بند رہا اور کمپنی اس بارے میں مزید تفتیش کر رہی ہے۔

صدر ٹرمپ ٹوئٹر کا باقاعدگی سے استعمال کرتے ہیں اور ان کے چار کروڑ سے زیادہ فالوئرز ہیں۔

جمعرات کی شام صدر ٹرمپ کے اکاؤنٹ کے صفحے پر جانے والے صارفین کے سامنے پیغام آ رہا تھا کہ 'معذرت، یہ پیج موجود نہیں ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption صدر ٹرمپ کے ٹوئٹر پر چار کروڑ سے زائد فالوئرز ہیں

اکاؤنٹ بحال ہونے کے بعد صدر ٹرمپ کی پہلی ٹویٹ ریپبلیکن پارٹی کے نئے ٹیکس پلان کے بارے میں تھی۔

واضح رہے کہ امریکی صدر کا سرکاری اکاؤنٹ متاثر نہیں ہوا تھا۔

ٹوئٹر نے اپنے بیان میں کہا کہ وہ اس واقعے کے مزید تفتیش کر رہے ہیں تاکہ ممکن بنایا جا سکے کہ ایسا دوبارہ نہ ہو۔

بعد میں انھوں نے اپنی ٹویٹ میں کہا: 'ہماری تفتیش سے یہ معلوم ہوا ہے کہ اکاؤنٹ ٹوئٹر کسٹمر سپورٹ کے ایک نمائندے نے بند کیا تھا جس کا کمپنی میں آخری دن تھا۔ ہم اس بارے میں مزید کام کر رہے ہیں۔'

صدر ٹرمپ نے ٹوئٹر کا استعمال مارچ 2009 میں شروع کیا تھا اور وہ سوشل میڈیا اپنی پالیسیوں کے اعلان کرنے کے لیے اور اپنے ناقدین پر تنقید کرنے کے لیے استعمال کرتے رہے ہیں۔

اس کے بعد ٹوئٹر پر ایک نہایت ہی دلچسپ بحث چھڑ گئی۔ بہت سے ٹوئٹر صارفین نے ایسا کرنے والے اہلکار کو ہیرو قرار دیا تو وہیں کئی نے اس پر ناراضی کا بھی اظہار کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER

ٹیڈ لیو جو کہ امریکی کانگریس کے رکن ہیں، انہوں نے لکھا، ’اس ٹوئٹر اہلکار کے نام جس نے ٹرمپ کا اکاؤنٹ بند کیا: آپ نے گیارہ منٹ کے لیے امریکہ کو خوش کر دیا۔ میں آپ کے لیے پیتزا ہٹ کا پیتزا خریدوں گا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER

ہارلن ہل نے اپنے ٹویٹ میں لکھا، ’ اگر کوئی بھی ٹوئٹر اہلکار صدر کا اکاؤنٹ بند کر سکتا ہے، تو ہم سب کے لیے کیا امید ہے؟‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں