بٹ کوائن جیسی جادوئی چھڑی آپ کے ہاتھ میں آ جائے تو آپ کیا کریں گے؟

بِٹ کوائن تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

آج کل ہر طرف ڈیجیٹل اور ورچوئل کرنسی بِٹ کوائن کا شور ہے۔ میں جس چھوٹے بڑے سے ملتا ہوں اُس نے کم از کم اِس کا ذکر ضرور سنا ہوتا ہے۔

بہت سے لوگ ایسے بھی ملتے ہیں جو چاہتے ہیں کہ کسی طرح میں اُن کی بِٹ کوائن خریدنے میں مدد کردوں کیونکہ اِس کی خرید و فروخت بھی کسی سائنس سے کم نہیں۔

ایسا نہیں کہ آپ اپنے بینک جائیں کچھ نوٹ کیشیئر کو تھمائیں اور بِٹ کوائن لے کر گھر آ جائیں۔ اِس میں اتنی زیادہ دلچسپی اس لیے ہے کیونکہ اکثر لوگوں نے بِٹ کوائن سے امیر ہونے والوں کی بہت سی کہانیاں سنی ہوتی ہیں جن میں انھیں خریدنے والوں نے چند کوڑیوں کے بِٹ کوائن خریدے اور آج مالا مال ہیں۔ پھر کس کا دل نہیں چاہتا کہ وہ بھی امیر سے امیر تر ہو جائے۔

اس بارے میں مزید پڑھیے

مصر کے مفتی اعظم کا بِٹ کوائن کے استعمال کے خلاف فتویٰ

کون ہے جس نے بٹ کوائن فروخت نہیں کیے؟

ڈیجٹل کرنسی بٹ کوائن کی قیمت میں زبردست اضافہ

ڈیجیٹل کرنسی بٹ کوائن کی مالیت 5000 پاؤنڈ سے تجاوز کر گئی

بِٹ کوائن کو ایک جادوئی چھڑی جیسی شہرت مل گئی ہے جو کھوٹے سکے کو سونا بنا دیتی ہے۔ اگر آپ کے ہاتھ میں ایسی طلسماتی چھڑی آ جائے جو ہر کھوٹے سکے کو سونا بنا دے تو آپ کیا کریں گے؟

یقیناً آپ اس چھڑی سے اخروٹ تو نہیں توڑیں گے۔ سونے کا ڈھیر لگا دیں گے لیکن آگر آپ لوگوں کو بتائیں کہ آپ کے پاس ایسی جادوئی چھڑی ہے تو شاید لوگ آپ کو دیوانہ سمجھیں۔ آج کل بِٹ کوائن کی دنیا جو ایک کرپٹو کرنسی ہے اس میں بظاہر کچھ ایسا ہی ہو رہا ہے۔

سٹاک مارکیٹ کلاک کے مطابق لندن سٹاک ایکسچینج جو حصص مارکیٹ کا ایک اہم بازار سمجھا جاتا ہے اس میں تین اعشاریہ نو کھرب ڈالر کا سرمایہ لگا ہوا ہے۔

کوائن مارکیٹ کیپ کے مطابق کرپٹو کرنسی مارکیٹ میں اس وقت 750 ارب ڈالر کا سرمایہ لگ چکا ہے اور بہت تیزی سے ایک کھرب تک پہنچ رہا ہے۔ اس بات سے اندازہ ہوتا ہے کہ کرپٹو کرنسی کو سرمایہ کار اب اہمیت دے رہے ہیں۔

جن لوگوں نے شروع میں اپنے کھوٹے سکوں سے بڑی تعداد میں بِٹ کوائن خریدے آج اُس کی مالیت آسمان سے باتیں کر رہی ہے اور اُن لوگوں کے سامنے سونے کے ڈھیر لگے ہیں۔ بہت سوں نے بِٹ کوائن خریدنے والوں کو دیوانہ کہا لیکن آج آہیں بھر رہیں ہیں کہ کاش کچھ دیوانگی ہم بھی دکھا دیتے۔

جہاں بہت سوں کے لیے بِٹ کوائن اب بہت مہنگا ہو چکا ہے وہاں اور بہت سی نئی کرپٹو کرنسیاں سامنے آئی ہیں۔ ان میں سب سے قابل ذکر رپل اور ایتھیریم ہیں۔

جنوری2017 میں ایک رپل کی قیمت 0.006$ تھی۔ اس کی قیمت میں 62400% اضافہ ہوا ہے اور اس وقت اس کی قیمت 3.75 ڈالر ہو چکی ہے اور یہ سرمائے کے حساب سے دوسرے نمبر پر ہے۔

میں جب اس میں اضافہ کی تناسب کا حساب کر رہا تھا تو خود بھی جواب دیکھ کر حیران رہ گیا۔ بظاہر یہ کوئی طلسماتی چھڑی سے کم نہیں۔

ایک طرف رپل شروع کرنے والے ادارے نے کرنسی کا اجرا کیا ہے تو دوسری جانب وہ دنیا بھر میں پیسوں کی ٹرانزیکشنز کا نیا تیز رفتار نظام بھی متعارف کروانے کی کوشش میں ہیں۔ رپل کے مطابق یہ نیا نظام بینکوں میں استعمال ہونے والے موجودہ سسٹم سے کہیں زیادہ تیز رفتار ہو گا۔

کرپٹو کرنسی مارکیٹ میں تیسرے نمبر پر ایتھیریم ہے جو ایک ڈی سینٹرلائیزڈ گلوبل نظام متعارف کروانے چاہتے ہیں جو اُن کے مطابق ٹیکنالوجی کی دنیا میں ہلچل مچا دے گی۔

ایتھیریم کوائن اس نظام میں لین دین کا اہم حصہ ہو گا۔ سنہ 2017 کے شروع میں آٹھ ڈالر کا تھا اور اس وقت اس کی قیمت 1000 ڈالر سے تجاوز کر چکی ہے۔

گذشتہ سال کے شروع میں بِٹ کوائن کی قیمت تقریباً 1000 $ امریکی ڈالر تھی۔ جہاں سال میں اس کی قیمت بڑھی کئی بار اچانک اس کی قیمت گری مگر پھر سنبھلی اور بڑھتے بڑھتے دسمبر میں 20000 $ ڈالر تک پہنچ گئی اور پھر اچانک گر کر 10000$ کے قریب آ گئی۔

بِٹ کوائن ہو یا دوسری کرپٹو کرنسی ان کی قیمت جہاں تیزی سے اوپر جاتی ہے وہاں تیزی سے نیچے بھی گرتی ہے لیکن اس وقت کون کمبخت اِن خطرات کو دیکھ رہا ہے۔

اس وقت بہت سے لوگ جنون کی حد تک بِٹ کوائن اور دوسری کرپٹو کرنسی میں پیسہ لگانے کے خواہش مند ہیں۔ جس چیز کی ڈیمانڈ بڑھ جائے اُس کی قیمت بھی بڑھ جاتی ہے اور کرپٹو کرنسی کا بھی یہی حال ہے۔ اِن کی ڈیمانڈ بہت زیادہ ہے اور قیمتیں تیزی سے بڑھ رہی ہیں۔لوگ کرپٹو کرنسی کو فی الحال مستقبل میں اس کی قدر وقیمت میں اضافے کے بارے میں قیاس آرائیوں کی بنیاد پر خرید رہے ہیں۔

سمجھنے کی بات یہ ہے کہ بِٹ کوائن ایک کرنسی ہے۔ اِس جیسی اور بہت سی دوسری کرنسیاں بھی ہیں۔ یہ صرف اور صرف آن لائن دنیا میں ہیں اور انھیں کسی ملک کے سٹیٹ بینک نے جاری نہیں کیا بلکہ ٹیکنالوجی کی دنیا سے منسلک اداروں نے اِن کا اجرا کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ان افراد کا مقصد ان ممالک کے سٹیٹ بینکوں کی جاری کردہ کرنسیوں کا متبادل پیش کرنا ہے جس پر کسی کا کنٹرول نہ ہو۔ اِن کرنسیوں کے نوٹ نہیں چھپتے اور انھیں حاصل کرنے کے لیے آپ کو کسی کرپٹو کرنسی کے ایکسچنج میں اکاؤنٹ کھولنا پڑتا ہے۔

آپ اپنی ملک کی کرنسی ایکسچینج کو دے کر کرپٹو کرنسی حاصل کر سکتے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ حاصل کرنے کے بعد یہ کہاں جائیں گی۔ یا تو آپ کو اپنی کرپٹو کرنسی ایکسچینج کے اکاؤنٹ میں رکھنی پڑتی ہے یا پھر انھیں ایک ڈیجیٹل والٹ یا بٹوہ حاصل کرکے اس میں رکھنا پڑتا ہے۔

ڈیجیٹل والٹ کا ای میل اکاؤنٹ کی طرح ایڈریس ہوتا ہے جس پر لوگ آپ کو پیسے بھیج سکتے ہیں۔ یہ والٹ موبائل فون ایپ کی صورت میں بھی ملتے ہیں اور کمپیوٹر پر بھی انھیں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

کرنسی کا ایک بنیادی استعمال تو خرید و فروخت یا اجرت دینا ہوتا ہے۔ سوال یہ ہے کہ کیا آپ کرپٹو کرنسی سے دکان پر جا کر کچھ خرید سکتے ہیں۔ فی الحال اس کے امکانات کم ہیں کیونکہ یہ بہت محدود جگہوں پر استعمال ہوتی ہے۔ ممکن ہے مستقبل میں انہی سے خرید و فروخت ہو مگر ابھی ایسا نہیں ہے۔

اسی بارے میں