سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ریڈ اِٹ نے ’جعلی پورن‘ پر پابندی عائد کر دی

Gal Gadot
Image caption ونڈر وومن کا کردار ادا کرنے والی اداکارہ گیل گڈوٹ کی بھی جعلی فلمیں بنائی گئیں

معروف ویب سائٹ ریڈ اِٹ نے ’جعلی پورن‘ پر پابندی عائد کر دی ہے۔

اس سے مراد ایسی تصاویر اور ویڈیوز جس میں کسی شخص کی رضامندی کے بغیر کسی فحش تصویر یا ویڈیو میں اس کا چہرہ لگا دیا جاتا ہے اب اس ویب سائٹ پر شیئر نہیں کی جا سکیں گی۔

ریڈ اِٹ کی جانب سے یہ فیصلہ مصنوعی ذہانت کے ایک سافٹ ویئر کے بعد سامنے آیا ہے جس کے ذریعے اس قسم کی ویڈیو تیار کرنا نسبتاً آسان ہوگیا ہے۔

* جعلی پورن ویڈیوز کے سنگین نتائج

* 24 گھنٹوں میں نفرت انگیز مواد ہٹانے کا قانون

خیال رہے کہ حالیہ دنوں میں 'ڈیپ فیکس' ویڈیوز شیئر کرنے اور اس بارے میں بات چیت کے لیے ریڈ اٹ کی ویب سائٹ کا استعمال کیا جارہا تھا۔

ویب سائٹ کے منتظمین نے کم سن بچوں کے حوالے سے بھی اپنی پالیسی پر نظرثانی کی ہے۔

اس سے قبل ٹوئٹر، جفی کیٹ اور پورن ہب نے ڈیپ فیکس پر پابندی عائد کی تھی جس کے بعد ریڈ اٹ پر بھی اس قسم کی پابندی کا دباؤ تھا۔

Image caption ریڈ اٹ کی ویب سائٹ کا سکرین شاٹ

تاہم ریڈ اٹ کے بعض صارفین اس فیصلے سے نالاں ہوسکتے ہیں جو سمجھتے ہیں کہ سنہ 2017 میں کٹر دائیں بازو کے دو فورمز کے ساتھ اس پلیٹ فارم پر بھی اظہارِ رائے کی جگہ کم ہونے کا خدشہ ہے۔

ریڈ اٹ نے پورنوگرافی سے متعلق اپنی نئی پالیسی میں بیان کیا ہے کہ یہاں 'کسی بھی فرد کی اجازت کے بغیر برہنہ تصاویر یا کسی جنسی عمل کے دوران بنائی گئی یا پھیلائی گئی ویڈیوز کو پھیلانا ممنوع ہے چاہے اس کی تفصیل میں لکھا کہ یہ جعلی ہے۔

ریٹ اٹ پر ڈیپ فیکس سب ریڈاٹ کے 91000 سے زائد سبسکرائبرز تھے اور اس اعلان کے بعد حذف کیے گئے پہلے فورمز میں شامل ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ ویب سائٹ نے 'سیلب فیکس' نامی فورم بھی حذف کر دیا ہے جو شوبز کی معروف شخصیات کی جعلی تصاویر سے متعلق ہے اور سات سال پہلے بنایا گیا تھا۔

Image caption اداکارہ نیٹلی پورٹمین کی جعلی پورن فلم بنائی گئی

ڈیپ فیکس کیسے بنائے جاتے ہیں؟

اس قسم کی ویڈیوز بنانے کے لیے عام طور پر ایک مخصوص سافٹ ویئر کا استعمال کیا جاتا ہے۔ اسے بنانے والے ڈیزائنر کے مطابق ایک ماہ سے بھی کم وقت میں اسے ایک لاکھ سے زائد بار ڈاؤن لوڈ کیا جا چکا ہے۔

جنسی تصاویر میں ردوبدل ایک صدی سے زائد وقت سے کیا جا رہا ہے، لیکن یہ ایک مشقت طلب کام ہے اور ویڈیوز کے ساتھ چھیڑ چھاڑ زیادہ مشکل عمل ہے۔ حقیقت پسندانہ ایڈٹنگ کے لیے ہالی وڈ جیسی تکنیک اور بجٹ درکار ہوتا ہے۔

لیکن اب یہ کام بےحد آسان ہو گیا ہے۔ منتخب شخص کی تصاویر اکٹھی کریں، ایک پورنوگرافک ویڈیو کا انتخاب کریں اور پھر انتظار کریں۔ آپ کا کمپیوٹر باقی کام کر دے گا، تاہم اگرچہ ایک چھوٹی سی ویڈیو کی تیاری میں 40 گھنٹے سے زیادہ وقت لگ سکتا ہے۔

سب سے مشہور ڈیپ فیکس مشہور شخصیات کے ہیں لیکن آپ کسی کی بھی واضح تصاویر حاصل کر کے یہ کام کر سکتے ہیں اور جب لوگ اپنی بہت ساری سیلفیاں اور تصاویر سوشل میڈیا پر پوسٹ کرتے ہیں تو یہ کام کچھ زیادہ مشکل نہیں رہتا۔

اس تکنیک کو دنیا بھر میں توجہ حاصل ہوئی ہے۔ حالیہ دنوں میں جنوبی کوریا کے انٹرنیٹ صارفین کی جانب سے 'ڈیپ فیکس' کی تلاش میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ جس کی شاید ایک وجہ 23 سالہ کورین پاپ سٹار سیولہین کی بہت ساری ڈیپ فیکس ویڈیوز تھیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں