ہفتے میں کتنی ورزش سے دل کی شریانیں صحتمند رہتی ہیں؟

جرنل آف فیزیئولوجی میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں شرکا کی ورزش کی ماضی کی عادتوں اور دل کی شریانوں میں سختی کا جائزہ لیا گیا۔ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption جرنل آف فیزیئولوجی میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں شرکا کی ورزش کی ماضی کی عادتوں اور دل کی شریانوں میں سختی کا جائزہ لیا گیا۔

ایک نئی تحقیق کےمطابق دل کی مرکزی شریانوں کو سخت ہونے سے روکنے کے لیے ہفتے میں چار سے پانچ بار ورزش کرنا انتہائی مفید ہے۔

ساٹھ سال کی عمر والے 100 افراد کا جائزہ لینے سے پتا چلا ہے کہ ہفتے میں دو یا تین مرتبہ ورزش سے صرف چند شریانیں صحت مند رہتی ہیں۔

محققین کا کہنا ہے کہ کسی بھی قسم کی ورزش سے دل کے امراض کا خطرہ کم ہو جاتا ہے۔ مگر زندگی کے درست مرحلے پر ورزش کی درست مقدار سے دل اور خون کے نظام دونوں پر عمر کے اثرات کم کر دیتا ہے۔

جرنل آف فیزی اولوجی میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں ورزش کی ماضی کی عادتوں اور دل کی شریانوں میں سختی کا جائزہ لیا گیا۔

امریکی محققین نے دریافت کیا ہے کہ ہفتے میں دو سے تین مرتبہ (30 منٹ فی سیشن) ورزش کرنے سے سر اور گردن کو جانے والی شریانیں صحت مند رہتی ہیں۔ تاہم جو لوگ ہفتے میں 4 سے 5 مرتبہ ورزش کرتے ہیں ان کی مرکزی شریانیں بھی صحت مند رہتی ہیں۔

مرکزی شریانیں وہ ہیں جو چھاتی اور پیٹ کو خون فراہم کرتی ہیں۔

اس تحقیق میں خوراک، سماجی بیک گراؤنڈ اور تعلیم جیسے عناصر کو زیرِ غور نہیں لایا گیا اور ان عناصر کا شریانوں کی صحت پر اثر ہو سکتا ہے۔

اسی بارے میں