یو ٹیوب نے ’تشدد پر اکسانے والا مواد‘ حذف کر دیا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پولیس نے گذشتہ دو سالوں کے دوران یو ٹیوب سے کہا ہے کہ وہ 50 سے 60 میوزک ویڈیوز کو حذف کر دے کیونکہ وہ تشدد پر اکساتی ہیں

ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یو ٹیوب کا کہنا ہے کہ اُس نے ایک سینئیر پولیس اہلکار کے کہنے پر آدھی سے زیادہ ’پرتشدد‘ میوزک ویڈیوز کو حذف کر دیا ہے۔

یو ٹیوب کا کہنا ہے کہ اب تک 30 سے زیادہ کلپس کو ہٹایا جا چکا ہے۔

خیال رہے کہ میٹرو پولیٹن پولیس کمشنر کریسڈا ڈک نے یو ٹیوب پر موجود چند ویڈیوز کو لندن میں قتل اور پرتشدد جرائم میں اضافے کو فروغ دینے کا الزام عائد کیا ہے۔ انھوں نے بطور خاص ’ڈرل میوزک‘ کا ذکر کیا۔

انھوں نے یو ٹیوب سے مطالبہ کیا کہ وہ ایسا مواد حذف کر دیں جو تشدد کو پرکشش بنا کر پیش کرتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

’خاتون حملہ آور یو ٹیوب سے نالاں تھیں‘

24 گھنٹوں میں نفرت انگیز مواد ہٹانے کا قانون

یوٹیوب نے 80 لاکھ سے زائد ویڈیوز حذف کر دیں

شدت پسندی روکنے کے لیے چار بڑی کمپنیوں کا اتحاد

شکاگو سے شروع ہونے والے اس ڈرل میوزک کے سب سے بڑے سٹار چیف کیف جو سنہ 2012 میں آنے والا ’آئی ڈونٹ لائیک‘ نامی گانے کے لیے مشہور ہیں۔ ان کے گانے کے بول اکثر منشیات اور تشدد کی تفصیلات بیان کرتے ہیں۔

فروری میں 17 سالہ جونیئر ریپر سمپسن کو اس وقت عمر قید کی سزا سنائی گئی جب ان کے تین ساتھیوں نے 15 سالہ جرمین گوپل کو گلا دبا کر ہلاک کر دیا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ سمپسن نے جرمین کو مارنے سے پہلے چاقو کے ساتھ حملوں کے بارے میں ایک ٹریک لگایا تھا۔

جج اینتھونی لیونارڈ نے سمپسن کو عمر قید کی سزا سناتے ہوئے کہا ’آپ نے تجویز کیا کہ یہ دھن صرف شو کے لیے تھی تاہم مجھے آپ کی بات پر یقین نہیں ہے اور مجھے شک ہے کہ آپ حملے کے صحیح موقعے کا انتظار کر رہے تھے۔‘

’تشدد کے اشارے‘

پولیس نے گذشتہ دو برسوں کے دوران یو ٹیوب سے کہا ہے کہ وہ 50 سے 60 میوزک ویڈیوز کو حذف کر دے کیونکہ وہ تشدد پر اکساتی ہیں۔

ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یو ٹیوب نے اس کے بعد 30 سے زیادہ ایسی ویڈیوز کو ہٹا دیا ہے۔

میٹرو پولیٹن پولیس کے مائیک ویسٹ کا کہنا ہے کہ گروہ فلموں اور مواد کے ساتھ ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کی کوشش کرتے ہیں جو موسیقی کی ویڈیو کی طرح لگتا ہے لیکن اصل میں ان میں گروہوں کو دھمکی دینے کی زبان استعمال ہوتی ہے۔

ان کے مطابق ان ویڈیوز میں تشدد کے اشارے ہوتے ہیں جو یہ بتاتے ہیں کہ وہ ہتھیار استعمال کر رہے ہیں۔

دوسری جانب یو ٹیوب کے ایک ترجمان کا کہنا ہے’ ہم نے ایسی پالیسیاں بنائی ہیں جو خاص طور پر برطانیہ میں چاقو سے تشدد کی ویڈیوز سے نمٹنے میں مدد کرتی ہیں۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں