73 ہزار سال قدیم نقاشی جو ’ہیش ٹیگ‘ جیسی دکھتی ہے

قدیم نقاشی تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سائنسدانوں نے نقاشی کا یہ چھوٹا سا ٹکڑا جنوبی ساحل پر بلومبوز غار سے دریافت کیا ہے

جنوبی افریقہ میں سائنسدانوں نے ایک ایسا چھوٹا سا پتھر دریافت کیا ہے جس پر ان کے مطابق انسانی تاریخ کی سب سے قدیم نقاشی (ڈرائنگ) موجود ہے۔

یہ نقاشی تقریباً 73 ہزار سال پرانی بتائی جاتی ہے جو کہ متوازی لکیروں پر مبنی ہے اور پتھر پر سرخ مٹی سے بنائی گئی ہے۔

سائنسدانوں نے نقاشی کا یہ چھوٹا سا ٹکڑا جنوبی ساحل پر بلومبوز غار سے دریافت کیا ہے۔ بعض کا کہنا ہے کہ یہ نقاشی کچھ ’ہیش ٹیگ‘ یعنی # جیسی دکھتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں!

عالم اسلام میں فن نقاشی

چین میں جانور کے قدیم ترین قدموں کے نشان دریافت

سعودی عرب میں ہزاروں سال قدیم ’دروازوں‘ کی دریافت

دنیا بھر میں جہاں سائنسدان قدیم نقاشی دریافت کر رہے ہیں وہیں بدھ کو جریدے نیچر میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں کہا گیا ہے کہ پتھر پر موجود یہ لکیریں پہلی خیالی نقاشی ہے۔

تحقیق کے مطابق قدیم فنکاروں نے پتھر پر نقاشی کے لیے ’سرخ مٹی اور موم‘ کا استعمال کیا۔

انسان کم از کم دو لاکھ 85 ہزار سال سے سرخ مٹی کا استعمال کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جدید انسان کے بارے میں کہا جاتا ہے وہ سب سے پہلے تین لاکھ 15 ہزار سال پہلے جہاں ظاہر ہوا اسے اب کا افریقہ کہا جاتا ہے

ماہر آثار قدیمہ کرسٹوفر ہینشل ووڈ نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا ہے کہ ’یہ نقاشی ممکنہ طور پر اپنی تکمیل کے اعتبار سے بہت پیچیدہ ہے۔‘

ان کا کہنا ہے کہ ’پتھر کے کناروں پر ان لکیروں کے اچانک سے ختم ہو جانے کا مطلب ہے کہ یہ کسی بڑے حصے پر پھیلی ہوئی تھیں۔‘

جدید انسان کے بارے میں کہا جاتا ہے وہ سب سے پہلے تین لاکھ 15 ہزار سال پہلے جہاں ظاہر ہوا اسے اب کا افریقہ کہا جاتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں