سوشل میڈیا سائٹ ٹمبلر نے تمام فحش مواد پر پابندی عائد کر دی

ٹمبلر تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption چند ہفتے قبل ٹمبلر پر بچوں کے ساتھ جنسی ذیادتی کی تصاویر شائع ہونے کے بعد ایپل نے اپنے ایپ سٹور سے ٹمبلر کو ہٹا دیا تھا

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹمبلر نے اپنی ویب سائٹ پر تمام پورنوگرافک مواد پر پابندی کا اعلان کیا ہے، اس پابندی کا اطلاق 17 دسمبر سے ہوگا۔

اس نئی پالیسی کا اعلان ایپل کے ایپ سٹور سے ٹمبلر کی ایپلی کیشن ہٹائے جانے کے چند ہفتوں کے بعد سامنے آیا ہے۔

ایپل نے اپنے ایپلی کیشن سٹور سے ٹمبلر کو اس وقت ہٹا دیا تھا جب بچوں کے ساتھ جنسی بدسلوکی کی کچھ تصاویر ٹمبلر پر اس کے فلٹرز کو دھوکہ دیتے ہوئے شائع ہو گئی تھیں۔

ایک بیان میں ٹمبلر نے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ضیف ڈی اونوریو نے زور دیا ہے کہ ٹمبلر کی ایسے مواد کے حوالے سے ’سخت پالیسی‘ ہے تاہم وہ سائٹ کو مزید محفوظ بنانا چاہتے ہیں۔

انھوں نے لکھا کہ ’ہمارے اقدامات اپنی کمیونٹی کے لیے پیار اور امید پر مبنی ہے۔‘

یہ بھی پڑھیں!

انڈیا میں بچے بالغوں کی فلمیں دیکھنے پر مجبور

'یورپ بچوں سے متعلق جنسی مواد کا گڑھ‘

نوجوان انٹرنیٹ پر خود کو ٹرول کیوں کر رہے ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

نئے ضابطہ اخلاق کے مطابق صارفین ’اصل انسانوں کے جنسی اعضا‘ پوسٹ نہیں کر سکتے، اس کے لیے علاوہ کوئی بھی ایسا مواد کو جو ’اس حد تک حقیقت پسندانہ ہو‘ کہ وہ اصل محسوس ہو، اس کی بھی اجازت نہیں ہوگی۔

تاہم ویب سائٹ کے مطابق ایسی برہنہ پوسٹس جو ’فنکارانہ، تعلیمی، خبر کی اہمیت اجاگر کرنے والی، یا سیاسی‘ ہوں وہ قابل قبول ہیں اور ضروری نہیں کہ انھیں بھی ہٹا دیا جائے گا۔

وہ صارفین جنھوں نے بالغانہ مواد پوسٹ کیا ہوا ہے انھیں نوٹس کے ذریعے آگاہ کہ جائے کہ وہ پابندی کے خلاف اپیل کیسے کر سکتے ہیں، یا اس ویب سائٹ کے باہر اپنا مواد کیسے محفوظ کر سکتے ہیں۔

خیال رہے کہ چند ہفتے قبل ٹمبلر پر بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کی تصاویر شائع ہونے کے بعد ایپل نے اپنے ایپ سٹور سے ٹمبلر کو ہٹا دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ٹمبلر کا کہنا تھا کہ ٹمبلر پر اپ لوڈ کی جانے والی ہر تصویر کو سکین کیا جاتا ہے

ٹمبلر کا کہنا تھا کہ تمام غیرقانونی تصاویر کے بارے میں جیسے ہی مطلع ہوئے انھیں ہٹا دیا گیا تھا۔

ٹمبلر کا کہنا تھا کہ ٹمبلر پر اپ لوڈ کی جانے والی ہر تصویر کو سکین کیا جاتا ہے کہ آیا ان میں سے کوئی بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی پر مبنی کوئی مواد تو نہیں۔

ٹمبلر عام طور پر جنسی مواد کو اپنی ویب سائٹ میں شیئر کرنے کی اجازت دیتا ہے۔

اس ویب سائٹ پر اسی قسم کے مواد پر انڈونیشیا میں ایک دن کی پابندی عائد کی گئی تھی جب کہ جنوبی کوریا بھی ماضی میں اسے جنسی مواد کی بہتر نگرانی کرنے کے حوالے سے منتبہ کر چکا ہے۔

اسی بارے میں