انڈیا ہلکی ترین سیٹلائٹ مدار میں بھیج رہا ہے

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

انڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ دنیا کی سب سے ہلکی سیٹلائٹ مدار میں بھیج رہا ہے۔ صرف 1.2 کلوگرام وزنی کلامسیٹ V-2 نامی یہ سیٹلائٹ خلائی تعلیمی ادارے کے طلبہ نے بنائی ہے۔

انڈیا کی خلائی ایجنسی کا کہنا ہے کہ اس کے ذریعے ریڈیو آپریٹروں کی ترقی ہوگی اور 'سکول کے بچوں کو مستقبل کے سائنس دان اور انجنیئر بننے پر مائل کرے گی'۔

انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن (آئی ایس آر او) اِس سیٹلائٹ کو اپنے ’شری ہری کوٹا‘ کے خلائی مرکز سے بھیجے گی۔

خلائی مشن کے بارے میں مزید پڑھیے!

’خلا میں آنکھ‘، انڈیا نے جاسوس سیٹلائٹ روانہ کر دیا

کیا انڈیا انسانوں کو خلا میں بھیج سکتا ہے؟

خلا سے انڈیا کی فضا الگ کیوں دکھائی دیتی ہے؟

انڈیا کا مواصلاتی سیٹلائٹ خلا میں چھوڑنے کا کامیاب تجربہ

آئی ایس آر او کے سربراہ کا کہنا ہے کہ ’کلامسیٹ دنیا کی تاریخ میں سب سے ہلکی سیٹلائٹ ہے جس کو مدار میں بھیجا جا رہا ہے۔‘

اِس میں ایسی سہولت موجود ہیں جو کہ ہیم ریڈیو ٹرانسمشن کے لیے سیٹلائٹ کا کام کر سکتی ہے۔ ہیم ریڈیو ٹرانسمشن وائرلیس مواصلاتی رابطہ ہے جس کو شوقین لوگ غیر تجارتی سرگرمیوں کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

جون 2017 میں امریکہ میں اِنہیں طلبہ نے اِس سے بھی ہلکی 64 گرام کی سیٹلائٹ کو ناسا کے ذریعے مدار سے نیچے اُڑایا۔ اِس طرح کی پرواز تکنیکی اعتبار سے خلا میں تو جاتی ہے پر مدار میں نہیں۔

Image caption کلامسیٹ وی 2 سپیس کڈز انڈیا کے طلبہ نے بنایا

کلامسیٹ- V2 چنئی کے تعلیمی ادارے سپیس کڈز انڈیا سے تعلق رکھنے والے طلبا نے بنایا ہے۔ اب تک انڈین طلبا کی جانب سے بنائے گئے نو سیارچوں کو خلائی راکٹس میں جگہ ملی ہے۔

اسی بارے میں