’میرا کینسر نظر نہیں آتا تھا لیکن میں اسے چھپاتی تھی‘
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بریسٹ کینسر سے آگاہی: ’میرا کینسر نظر نہیں آتا تھا لیکن میں اسے چھپاتی تھی‘

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق دنیا بھر میں تقریباً ہر سال بیس لاکھ خواتین کینسر سے متاثر ہوتی ہیں جن میں سے ایک تہائی اپنی زندگی گنوا بیٹھتی ہیں۔

پاکستان میں کیسنر سے مقابلہ کرنے کا مطلب معاشرتی اقدار کو چیلنج کرنا بھی ہے۔ اس مرض کی ابتدائی تشخیص ضروری ہے لیکن طبی ماہرین کو خدشہ ہے کہ بہت سی خواتین شرم کے مارے اس مرض کے بارے میں نہیں بتاتی ہیں۔ مزید دیکھیے ہماری ساتھی شبنم محمود، وقاص انور اور موسی یاوری کی اس ڈیجیٹل ویڈیو میں۔۔۔

متعلقہ عنوانات