ہاتھی انڈیا کا قومی ورثہ

ہاتھی
Image caption انڈیا میں تقریباً انتیس ہزار ہاتھی بتائے جاتے ہیں

انڈیا میں حکومت نے ملک میں ہاتھیوں کی تعداد کو بچانے کے لیے اسے قومی ورثے کے جانور کا درجہ دینے کا اعلان کیا ہے۔

وزارتِ ماحولیات کے مطابق اس وقت ملک میں تقریباً انتیس ہزار ہاتھی موجود ہیں۔

دلی میں بی بی سی کی نامہ نگار کائلی مورس کے مطابق حکومت کی ہاتھیوں کی حفاظت کے لیے بنائی گئی ٹاسک فورس کا کہنا ہے کہ ہاتھی کو خصوصی درجہ دینے سے اس کی حفاظت میں مدد ملے گی۔

حکومت کے مطابق اس جانور کو قومی ورثہ قرار دینے سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ اس کی انڈین روایات اور ثقافت میں کتنی اہمیت ہے۔

Image caption گزشتہ ماہ مغربی بنگال میں ایک تیز ٹرین سے ٹکرانے سے سات ہاتھی ہلاک ہو گئے تھے

ماحولیات کے وزیر جئے رام رمیش نے کہا کہ تحفظ کے حوالے سے ہاتھی کو بھی اتنی ہی اہمیت دی جانی چاہیئے جتنی کہ شیر کو دی جاتی ہے۔

انڈیا میں تقریباً انتیس ہزار ہاتھی بتائے جاتے ہیں جبکہ شیروں کی کل تعداد پندرہ سو کے لگ بھگ ہے۔

ہاتھی کے رہنے کا قدرتی ماحول اکثر انسانی ترقی سے متصادم رہتا ہے۔ گزشتہ ماہ ہی مغربی بنگال میں ایک تیز رفتار ٹرین سے ٹکرانے سے سات ہاتھی اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

ٹاسک فورس کا کہنا ہے کہ ہاتھیوں کے بغیر انڈیا کا تصور نہیں کیا جا سکتا جبکہ ہاتھیوں کے ساتھ انڈیا کے لیے ایسے مستقل طریقۂ کار درکار ہیں جو زمینی حقائق کو سامنے رکھتے ہوئے ماحولیاتی توازن کو قائم رکھیں۔

اس کا ایک طریقہ یہ کہ ہاتھیوں کے تحفظ کے لیے ایک قومی اتھارٹی بنائی جائے اور پورے ملک میں ہاتھیوں کے لیے بہت زیادہ ریزرو یا محفوظ علاقے بنائے جائیں۔

اسی بارے میں