لمبوں میں خصیوں کے سرطان کا امکان زیادہ

سرطان
Image caption برطانیہ میں ہر سال خصیوں کے سرطان کے دو ہزار کے قریب کیسز سامنے آتے ہیں

امریکہ میں ماہرین کا کہنا ہے کہ لمبے قد والے افراد کا خصیوں کے سرطان میں مبتلا ہونے کا زیادہ امکان ہے۔

دس ہزار سے زائد افراد کے اعداد و شمار کے ذریعے کی جانے والی اس تحقیق میں پتہ چلا کہ جن مردوں کے اوسط قد سے دو انچ زیادہ تھے ان میں خصیوں کے سرطان کا خطرہ تیرہ فیصد زیادہ پایا گیا۔

تاہم تحقیق کاروں نے کہا ہے کہ اس قسم کے سرطان کے امکانات کم ہوتے ہیں۔

ماہرین کے مطابق دوسرے عوامل جن میں خاندان کی صحت کی تاریخ بھی شامل ہے اس سرطان کے خطرے میں اضافہ کر سکتے ہیں۔

برطانیہ میں ہر سال خصیوں کے سرطان کے دو ہزار کے قریب کیسز سامنے آتے ہیں جو کہ مجموعی طور پر مختلف اقسام کے سرطان میں مبتلا مردوں کا ایک فیصد ہے۔

تازہ تحقیق میں امریکی تحقیق کاروں نے تیرہ مختلف تحقیقوں سے استفادہ حاصل کیا ہے۔

تحقیق کے سربراہ ڈاکٹر مائکل بلیز کُک اور ان کی ٹیم نے ان اعداد و شمار کا گہرائی سے جائزہ لے کر یہ معلوم کرنے کی کوشش کی ہے کہ قد اور وزن کا خصیوں کے سرطان سے کس حد تک تعلق ہے۔

اس تحقیق میں پتہ چلا ہے کہ جسمانی وزن کا اس سرطان سے کوئی تعلق نہیں ہے البتہ لمبا قد ہونے سے اس طرح کے سرطان کا خطرہ کسی حد تک بڑھ سکتا ہے۔

دوسری جانب برطانیہ میں سرطان کی تحقیق کرنے والے ادارے ’کینسر ریسرچ یو کے‘ کی ڈائریکٹر سارہ ہیوم کا کہنا ہے کہ اس تحقیق کے نتائج سے لمبے قد والے مردوں کو پریشان نہیں ہونا چاہیے کیونکہ خصیوں میں ہونے والے سو پھوڑوں میں سے صرف چار سرطان زدہ ہو سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس معاملے کا سب سے مثبت پہلو یہ ہے کہ خصیوں کا سرطان اگر پوری طرح پھیل بھی جائے تب بھی مریض صحت یاب ہو سکتے ہیں۔

اسی بارے میں