والدین کی محنت، بچوں کے نمبر اچھے

Image caption اولاد میں اضافے کے ساتھ ساتھ والدین بچوں کی تعلیم پر زیادہ توجہ نہیں دیتے: تحقیق

برطانوی تحقیق کے مطابق جن بچوں کے والدین پڑھائی پر زیادہ زور دیتے ہیں وہ بچے اچھے نمبر لیتے ہیں۔

تحقیق میں کہا گیا ہے کہ والدین کا بچوں کے ہوم ورک کرنے پر زور دینے سے زیادہ فائدہ ہوتا ہے۔

لیسٹر اور لیڈز یونیورسٹیز کے تحقیق دانوں کا کہنا ہے کہ اولاد میں اضافے کے ساتھ ساتھ والدین بچوں کی تعلیم پر زیادہ توجہ نہیں دیتے۔

دونوں یونیورسٹیز کے تحقیق دانوں نے نیشنل چائلڈ ڈویلپمنٹ سٹڈی سے ان بچوں کی معلومات کو تحقیق کا حصہ بنایا ہے جو 1958 میں پیدا ہوئے۔

اس تحقیق میں یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ ان لوگوں پر والدین کا کتنا اثر تھا اور ان کی اپنی کاوش کتنی تھی۔ اس سلسلے میں ان لوگوں کے رجحان کو بھی دیکھا گیا مثلاً سولہ سال کی عمر میں وہ کیا سکول جانے کو وقت کا ضیاع سمجھتے تھے۔

اس کے ساتھ ساتھ سکولوں کے بارے میں یہ معلوم کرایا گیا کہ سکول کیسے والدین کو بچوں کی پڑھائی میں دلچسپی لینے پر مائل کرتے تھے۔ اس کے علاوہ سکول بچوں کو نظم و ضبط کا پابند بنانے کے لیے کیا اقدامات اٹھاتے تھے۔

تحقیق کے مطابق والدین بچوں کی پڑھائی پر زور دیتے ہیں اور جب بچے پڑھائی پر زیادہ توجہ دیتے ہیں تو والدین بچوں کے ساتھ مزید محنت کرتے ہیں۔ تحقیق میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ جو لوگ کھاتے پیتے گھرانے سے تعلق رکھتے ہیں وہ بچوں پر زیادہ محنت کرتے ہیں۔

اسی بارے میں