’ڈسکوری کی روانگی میں تاخیر‘

فائل فوٹو، ڈسکوری
Image caption خلائی شٹل ڈسکوری کو زیادہ سے زیادہ پیر تک خلا میں بھیجا جانا تھا

خلائی شٹل ڈسکوری سے ایندھن کے رساؤ کی وجہ سے اب اس کے آخری مشن پر روانگی میں تین ہفتے کی تاخیر ہو گئی ہے۔

ڈسکوری خلائی شٹنل کو سروس میں آئے چھبیس سال ہو چکے ہیں اور اس نے اپنےآخری مشن کے لیے بین الاقوامی خلائی سٹیشن (آئی ایس ایس) سے روانہ ہونا ہے۔

مشن سے واپسی کے بعد ڈسکوری کی آخری منزل میوزیم ہو گا۔

امریکہ کے خلائی ادارے ناسا نے گزشتہ ہفتے ڈسکوری کو خلا میں روانہ کرنے کی کوشش کی تھی لیکن خراب موسم اور فنی مسائل کی وجہ سے ایسا ممکن نہیں ہو سکا۔

اب شٹل میں ایندھن بھرنے کے عمل کے دوران اس سے ہائڈروجن کے اخراج پر روانگی معطل کر دی گئی ہے۔

ناسا نے فنی خرابی کو دور کرنے کے بعد شٹل کو اب تیس نومبر کو روانہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ناسا نے اس سے پہلے زیادہ سے زیادہ پیر تک ڈسکوری کو خلا میں روانہ کرنا تھا۔

لیکن اب ساڑھے تین ہفتوں تک سورج کی سمت میں تبدیلی کی وجہ سے مدار میں پلیٹ فام پر شٹل کو اتارنے میں مشکل پیش آئی گی۔

سروج کی سمت کی تبدیلی کی وجہ سے مدار میں پہنچنے والی شٹل کو زیادہ درجہ حرارت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

اسی بارے میں