ناسا: معلومات سمیت کمپیوٹرز فروخت

امریکی خلائی ایجنسی ناسا کو اس وقت پریشانی کا سامنا کرنا پڑا جب اس نے اپنے کمپیوٹر ان پر موجود معلومات سمیت بیچ دیے۔

ناسا نے یہ دیکھے بغیر کہ ان کمپیوٹرز پر موجود پہلے سے خفیہ معلومات ہٹائی گئی ہیں یا نہیں ان کو بیچ دیا۔

ناسا میں ہونے والی تفتیش کے مطابق دس بار ایسا ہوا ہے جب کمپیوٹرز کو معلومات ہٹائے بغیر بیچ دیا گیا۔ اس کے علاوہ چار مزید کمپیوٹرز جو بیچنے کے لیے تیار تھے ان پر بھی اسلحے کے حوالے سے ڈیٹا موجود تھا۔

یہ چار کمپیوٹرز اس وقت بیچے جانے والے تھے کیونکہ ناسا اپنے خلائی شٹل کے آپریشن بند کرنے والی ہے۔ خلائی شٹل کی آخری اڑان جون دو ہزار گیارہ میں ہو گی۔

تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ کمپیوٹرز پر سے خلائی شٹل کے حوالے سے معلومات ہٹانے کی پالیسی کا خیال نہیں رکھا جاتا۔

تفتیش میں معلوم ہوا کہ کمپیوٹرز میں سے معلومات نہ ہٹانے کے واقعات کینیڈی اینڈ جانسن سپیس سینٹر، ایمس اینڈ لینگلی ریسرچ سینٹرز میں ہوئے۔

تفتیش میں مزید معلوم ہوا کہ یہ معلوم کرنے کے لیے کہ معلومات کمپیوٹرز پر موجود ہیں یا نہیں کے ٹیسٹ نہیں کیے گئے۔ اس کے علاوہ وہ کمپیوٹرز جن پر ٹیسٹ کیے گئے اور معلوم ہو گیا کہ ان پر معلومات موجود ہیں اس کے باوجود ان کو بیچنے کے لیے رکھا گیا۔

اسی بارے میں