ایپل کے حصص کی قدر میں کمی

سٹیو جابز تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ایپل کی کئی انقلابی ایجادات کا شہرا سٹیو جابز کے سر جاتا ہے۔

ایپل کے چیف ایگزیکٹو سٹیو جابز کے استعفٰے کے بعد ایشیا اور یورپ کے حصص بازاروں میں ایپل کے شیئرز پانچ فیصد تک گرے ہیں۔دوسری جانب سام سنگ سمیت ایپل کے مخالفین کے شیئرز میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

اس سے پہلے چھپن سالہ سٹیو جابز سترہ جنوری سے طویل رخصتِ علالت پر تھے ان کے جگر کی پیوند کاری کی گئی ہے۔ وہ اس سے پہلے لبلبے کے کینسر سے صحت یاب ہوئے ہیں۔

کمپنی ملازمین کے لیے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ وہ مزید اپنے عہدے کے فرائض ادا نہیں نہیں کر سکتے۔

ایپل کی جانب سے انقلابی مصنوعات کے سلسلے جن میں آئی فون اور آئی پیڈ شامل ہیں انہیں مارکیٹ میں لانے کا سہرا جابز کے سر جاتا ہے۔

ان کی جگہ ایپل کے نئے سی ای او ٹِم کُوک ہوں گے جو حال ہی میں ایپل کے چیف آپریٹنگ آفیسر بنے تھے۔

ایپل کے عہدے داران کو لکھے گئے ایک مختصر خط میں جابز نے لکھا ’میں نے ہمیشہ کہا تھا اگر کبھی ایسا وقت آیا کے میں ایپل کے چیف ایگزیکٹو کی حیثیت سے اپنے فرائض کو ادا کرنے کے قابل نہ رہا تو آپ کو اس بارے میں بتانے والے پہلا شخص میں ہی ہوں گا۔‘

’ بدقسمتی سے وہ دن آ گیا ہے۔ میں ایپل کے چیف ایگزیکٹو کی چیثیت سے استعفٰی دیتا ہوں۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ ’مجھی یقین ہے کہ ایپل کے زیادہ روشن اور تخلیقی دن ابھی آنے ہیں اور میں ایک نئی حیثیت میں اس ادارے کی دیکھ بھال اور اپنا کردار ادا کروں گا۔‘

’میں نے ایپل میں رہتے ہوئے اپنی زندگی بہترین دوست بنائے۔ اتنے برس تک میرے ساتھ کام کرنے پر میں آپ کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔‘

ایپل کے بورڈ ممبر آرٹ لیوِنسن نے کمپنی کے لیے سٹیو جابز کے کام کو خراجِ تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ’ سٹیو کی غیر معمولی بصارت اور رہنمائی نے ایپل کو محفوظ کیا اور اسے دنیا کی سب سے تخلیقی اور اہم ٹیکنالوجی کمپنی کی پوزیشن پر پہنچایا۔‘

ایپل کے شیئرز فرینکفرٹ کے حصص بازار میں چار اعشاریہ ایک فیصد تک گرے جبکہ نیویارک کے نیسڈیک میں اس کے شیئیرز میں پانچ فیصد تک کمی آئی۔مبصرین کا کہنا ہے کہ یہ استعفٰی غیر متوقع نہیں تھا اس لیے اس کے بہت کم اثرات ہوں گے۔

جیسے ہی ایپل کے شیئیرز گرے ایشیا میں اس کے بڑے حریفوں تائیوان کے ایچ ٹی سی کے شئیرز چار اعشاریہ ایک فیصد جبکہ جنوبی کوریا کے سام سنگ کے شیئرز میں تین اعشاریہ دو فیصد اضافہ ہوا۔

یہ کمپنیاں سمارٹ فون اور ٹیبلیٹ پی سی کے میدان میں ایپل کا مقابلہ کر رہی ہیں اور ان کی ایپل کے ساتھ پیٹینٹ کے اوپر قانونی لڑائی بھی جاری ہے۔

فون مارکیٹ میں ایپل کے حریف نوکیا کے چیف ایگزیکٹو نے بھی سٹیو جابز کو خراجِ تحسین پیش کیا ’سٹیو جابز بذاتِ خود ایک تخلیقی سوچ اور کمپوٹر کی انڈسٹری ہیں۔‘

سٹیو جابز نے انیس سو ستر میں سٹیو وزنیک کے ہمراہ ایپل کی بنیاد رکھی۔ انیس سو اسی کی دہائی میں ان کے میسینٹوش کمپوٹر بہت مقبول ہوئے تھے۔

انیس سو پچاسی میں اپنے ساتھیوں کے ساتھ تنازعے کے بعد انہوں سے کمپنی چھوڑ دی، جس کے بعدانیس سو ستانوے میں انہوں ایپل کی تنظیمِ نو کی اور ایک رنگین آئی میک کمپوٹر متعارف کروایا۔

دو ہزار دو میں آئی پوڈ پیش کیا گیا جس کی وجہ سے کمپنی نے گذشتہ دہائی میں ہونے والے کمپنی کی ترقّی کی بنیاد رکھی۔

اگلی پیشکش آئی فون تھا، جس نے سمارٹ فونز کی ماکیٹ میں انقلاب لایا۔ اسی دوران آئی پیڈ بھی مارکیٹ میں پیش کیا گیا۔

ماہرین کے مطابق سٹیو جابز کی علالت کے باعث رخصت کے دوران ان مصنوعات کی کئی قسمیں مارکیٹ میں پیش کی جا چکی ہیں اور ان کے جانے سے نئے ورژنز پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

اسی بارے میں