ایپل:سام سنگ کے خلاف قانونی جیت

Image caption ایپل کا اپنے دیگر حریفوں کے ساتھ بھی ویب پیٹنٹ پر تنازعہ چل رہا ہے

جرمنی کی عدالت نے ٹیکنالوجی کمپنی سام سنگ کو اپنے ٹیبلٹ کمپیوٹرز کی فروخت یہ کہہ کر روکنے کا حکم دیا ہے کہ یہ آئی پیڈ کی نقل ہے۔

جرمنی کے مغربی شہر ڈسلڈف کی عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ کوریائی کمپنی سام سنگ نے اپنا ٹیبلٹ کمپیوٹر گیلکسی ٹیب بناتے ہوئے آئی پیڈ اور آئی فون کی ٹیکنالوجی کی نقل کی ہے۔

اگرچہ جرمن عدالت کے موجودہ حکم کا اطلاق صرف جرمنی میں ہوگا، تاہم نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اپیل اس عدالتی فیصلے کو بنیاد بنا کر دیگر یورپی ملکوں سے بھی گیلکسی ٹیب کی فروخت پر پابندی لگانے کی درخواست کر سکتی ہے۔

عدالت کے جج نے کہا ہے کہ ایپل اور سام سنگ کی مصنوعات میں ’واضح مشابہت‘ ہے۔

عدالت نے کہا ہے کہ وہ صرف اسی صورت میں یورپ سے باہر ہیڈکوارٹر رکھنے والی کسی کمپنی کے حق میں یورپ بھر میں فروخت پر پابندی کا حکم جاری کر سکتی ہے اگر اس کمپنی کی کوئی جرمن ذیلی کمپنی ہوتی اور یہ درخواست اسی ذیلی فرم کی طرف سے آئی ہوتی۔

یاد رہے کہ ایپل کا اپنے دیگر حریفوں کے ساتھ بھی ویب پیٹنٹ پر تنازعہ چل رہا ہے۔

ایپل کا دعوٰی ہے کہ تائیوان کی کمپنی ایچ ٹی سی نے اس کے پیٹنٹ کی خلاف ورزی کی ہے۔

ٹیکنالوجی کے حقوق کے سلسلے میں ایپل کے اپنے امریکی حریف موٹرولا کے ساتھ بھی تنازعہ چل رہا ہے۔

اسی بارے میں