ٹونا مچھلی کو بچانے کے لیے سخت اقدامات

ٹونا مچھلی تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ریکارڈ سے ڈیڑھ سو فیصد زیادہ ٹونا مچھلیاں فروخت کی گئیں

بحیرہ روم میں پائی جانے والی قیمتی بلیوفن ٹونا مچھلی کے غیرقانونی شکار کو روکنے کے لیے خطے کے ملکوں نے مزید سخت اقدامات کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

ٹونا مچھلی کی نسل کے تحفظ کے لیے قائم خطے کے ملکوں کی تنظیم انٹرنیشنل کمیشن فار کنزرویشن آف اٹلانٹک ٹوناز نے فیصلہ کیا ہے کہ اس مچھلی کے شکار کی نگرانی کے لیے مخصوص برقی نظام پر عملدرآمد کیا جائے گا۔

اب تک کی تحقیقوں سے یہ پتہ چلتا ہے کہ ٹونا مچھلی کا شکار اس سے کہیں زیادہ ہوتا ہے جتنا بتایا جاتا ہے۔

ترکی میں ہونے والے اس اجلاس میں شارک مچھلی کی ایک نسل سلکی شارک کو تحفظ دینے کا بھی فیصلہ کیا جس کی تعداد بھی شکار کی زیادتی کی وجہ سے تیزی سے کم ہورہی ہے۔

ٹونا مچھلیوں کے شکار کے لیے استعمال ہونے والی کشتیوں کا عملہ اکثر سلکی شارک بھی پکڑ لیتا ہے لیکن اب اسے ان مچھلیوں کو دوبارہ سمندر میں چھوڑنا ہوگا۔

مچھلیوں کی نایاب ہوتی نسلوں کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے بعض کارکنوں نے ٹونا مچھلی کی نسل کو ختم ہونے سے بچانے کے لیے برقی نظام کے نفاذ کو بڑا اہم اور مثبت فیصلہ قرار دیا ہے۔

اس سے پہلے ٹونا مچھلیوں کے شکار کو ریکارڈ کرنے کے لیے دستاویزی نظام رائج تھا جس کے بارے میں حال ہی میں بقائے ماحول کے لیے کام کرنے والے ایک ادارے نے اپنی رپورٹ میں کہا تھا کہ صرف پچھلے سال ٹونا مچھلیوں کا جتنا شکار ریکارڈ پر دکھایا گیا تھا، اس سے ڈیڑھ سو فیصد زیادہ ٹونا مچھلیاں فروخت کی گئیں کیونکہ اس مچھلی کے شکار کو جس دستاویزی نظام کے ذریعے ریکارڈ کیا جاتا ہے اس میں آسانی سے ہیر پھیر کرلی جاتی ہے۔

اسی بارے میں