ساتھی ہیکرز کی گرفتاری پر سائبر حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہیکرز کا تعلق امریکہ، برطانیہ اور جمہوریہ آئرلینڈ سے ہے

اینٹیسک نامی گروپ سے تعلق رکھنے والے ہیکرز نے اپنے ایک ساتھی کی گرفتاری کے بعد پانڈا لیب کی ویب سائٹ کو نشانہ بنایا ہے۔

یہ حملہ امریکی وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کے ہاتھوں سات مبینہ ہیکرز کی گرفتاری کے بعد کیا گیا ہے۔

ایف بی آئی نے ان سات افراد پر دس لاکھ کمپیوٹرز پر حملے کا الزام عائد کیا ہے۔ ان افراد کا تعلق امریکہ، برطانیہ اور جمہوریہ آئرلینڈ سے ہے۔

پانڈا لیب ویب سائٹ پر سائبر حملے کے بعد شائع کیے جانے والے پیغام میں کہا گیا ہے کہ ’لوسک اور اینٹیسیک کے دوستوں کے لیے پیامِ محبت‘۔

ہیکرز نے اس کمپنی پر الزام لگایا ہے کہ اس نے گرفتار کیے جانے والے ہیکرز کی نشاندہی میں پولیس کی مدد کی۔

پانڈا لیب کی مالک کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ اس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے تاہم اس نے اپنے صارفین کو یقین دلایا کہ ان کی معلومات محفوظ ہیں۔

ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ گرفتار کیے گئے پانچ افراد کا تعلق لوسک گروپ سے ہے جب کہ چھٹے ہیکر کا تعلق اینٹیسک گروپ سے ہے۔

ایف بی آئی کے مطابق لوسک گروپ کے رہنما ہیکٹر سیوئیر موسیغر بارہ الزامات میں قصور وار پائے گئے ہیں۔

بی بی سی کو حاصل ہونے والی اطلاعات کے مطابق ہیکٹر موسیغر نے ایف بی آئی کے ساتھ تعاون کیا ہے اور اسی تعاون کی وجہ سے وہ دوسرے الزامات سے بچ گئے ہیں۔

اسی بارے میں