صارفین کے ای میل تبدیل کرنے پر تنقید

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ماہرین کے مطابق فیس بک کے اس اقدام سے اسے نقصان پہنچے گا

سماجی رابطوں کی مقبول ویب سائٹ فیس بک کو صارفین کے ای میل ایڈریس تبدیل کرنے پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔

فیس بک نے صارفین کے پروفائل میں ان کے ای میل ایڈریس کو اپنے تخلیق کردہ ای میل’ @ فیس بک ڈاٹ کام‘ سے تبدیل کر دیا ہے۔

فیس بک کا کہنا ہے کہ اس نے یہ اقدام ویب سائٹ پر موجود معلومات کو یکساں کرنے کے لیے اٹھایا ہے۔

اگر فیس بک کا نیا ای میل نظام کام کرتا ہے تو اس صورت میں فیس بک پر ٹریفک یا استعمال میں اضافہ ہو گا اور اس کے نتیجے میں اسے زیادہ کاروبار ملے گا۔

صارفین نے اس اقدام کو پریشان کن اور نامعقول قرار دیتے ہوئے ہدایات فراہم کرنے کا کہنا ہے کہ کس طرح سے فیس بک کے دیے گئے ای میل کو اصل سے تبدیل کیا جائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption فیس بک پر صارف کے پروفائل پر موجود ای میل کی جگہ اب فیس بک کی جانب سےمہیا کیا جانے والا ای میل نظر آتا ہے

فیس بک نے اپنا ای میل نظام رواں سال اپریل میں لانے کا اعلان کیا تھا تاہم اس وقت اس اطلاع کو کم ہی اہمیت دی گئی تھی۔

فیس بک کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہےکہ’ہم ہر ایک صارف کو فیس بک کا ای امیل ایڈریس مہیا کر رہے ہیں کیونکہ ہمیں لگتا ہے کہ اسے صارف تلاش کر سکتے ہیں یہ ایک دوسرے سے رابطے میں مددگار ہے تاہم فیس بک کا ای امیل استعمال کرنے کا فیصلہ صارف کو خود کرنا ہے۔‘

انٹرنیٹ کے ایک ماہر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ فیس بک کو اس اقدام سے نقصان ہو گا۔

فورسٹر ریسرچ سے منسلک اینتھونی مولن نے کہا کہ اس سے پہلے گوگل نے بز پروگرام میں اس طرح کا قدم اٹھایا تھا لیکن صارفین سےاس سے پیچھے ہٹ گئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ’فیس بک کو اس کی ضرورت تھی کیونکہ انٹرنیٹ پر آپ کی شناخت میں ای امیل ایک پروکسی ہے اور یہ ہی فیس بک چاہتا ہے، لوگوں کے ای امیل اپنے ای میل سے تبدیل کرنے کی صورت میں ویب سائٹ پر ٹریفک میں اضافہ ہوتا ہے اور صارفین ویب سائٹ کے پابند ہو جاتے۔‘

اسی بارے میں