انسانی آنکھ میں ساڑھے بارہ سنٹی میٹر کا کیڑا

تصویر کے کاپی رائٹ Fortis Hospital
Image caption کرشنامورتی خوش قسمت تھے کہ کیڑا ان کے دماغ تک نہیں پہنچا

بھارتی شہر ممبئی میں ڈاکٹروں نے ایک مریض کی آنکھ سے ساڑھے بارہ سنٹی میٹر لمبا کیڑا نکالا ہے۔

پچھہتر سالہ پی کے کرشنامورتی کو اپنی دائیں آنکھ میں خارش کی شکایت تھی تاہم انہیں اس کی وجہ کا اندازہ بالکل نہ تھا۔

فورٹس ہسپتال میں ڈاکٹروں نے جب ان کا معائنہ کیا تو ان کی آنکھ میں ایک کیڑا ملا جسے ایک چھوٹے سے آپریشن کی مدد سے نکال دیا گیا۔ کرشنامورتی اب تیزی سے صحت یاب ہو رہے ہیں۔

ہسپتال کے میڈیکل ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس نرائنی نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ کیس انتہائی غیر معمولی تھا اور مریض بہت خوش قسمت تھے کہ یہ کیڑا ان کے دماغ تک نہیں پہنچا۔

ان کا کہنا تھا کہ کیڑے کو مزید تجزیے کے لیے لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے۔ ابھی یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ کیڑا کرشنامورتی کے جسم میں کیسے داخل ہوا۔

ڈاکٹر نرائنی کا کہنا تھا کہ یہ اس قسم کا پہلا واقعہ نہیں تاہم ایسے مریض بہت کم سامنے آتے ہیں اور اسی وجہ سے یہ غیر معمولی ہے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ کیڑا کسی بھی طرح انسان کے جسم میں داخل ہو کر خون میں شامل ہو جاتا ہے اور وہیں بڑھنے لگتا ہے۔

مریض کا کہنا تھا کہ ڈاکٹروں نے انہیں پہلے ادویات دی تھیں لیکن ان سے آرام نہیں آیا۔ انہوں نے پھر فورٹس ہسپتال میں ڈاکٹر وی سیتھارام سے رابطہ کیا جنہوں نے یہ آپریشن کیا۔

کرشنامورتی نے تصدیق کی کہ ان کی بیماری کی علامات ختم ہو گئی ہیں۔

ڈاکٹر سیتھارام نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے اس بات کی تائید کی کہ ان کے مریض خوش قسمت تھے کہ یہ کیڑا ان کے دماغ تک نہیں پہنچا۔ ان کے مطابق اس صورت میں انہیں بہت سے پیچیدہ ذہنی مسائل در پیش ہو سکتے تھے۔