آنکھ کے اشارے پر چلنے والا ٹی وی

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 1 ستمبر 2012 ,‭ 15:41 GMT 20:41 PST

یہ ٹی وی کے سیٹ میں نہیں بلکہ ٹی وی اور دیکھنے والے کے درمیان ایک جگہ پر رکھے جانے والے ایک سنسر میں ہو گی جو دیکھنے والے کی آنکھ کی حرکات پر نظر رکھے گا۔

جرمنی کے شہر برلن میں منعقد ہونے والے تجارتی میلے میں ایک ایسا ٹی وی متعارف کرایا گیا ہے جسے انسانی آنکھ کے اشاروں سے کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔

اس ٹی وی کو ہائر کمپنی نے سویڈن کے ایک ادارے ٹوبی کی بنائی ہوئی ٹیکنالوجی کی مدد سے تیار کیا ہے۔

ٹوبی کمپنی پہلے سے ہی کمپیوٹر پر آنکھ کے اشارے پر کام کرنے والی ٹیکنالوجی تیار کرتی ہے اور توقع کی جا رہی ہے کہ اس ٹیکنالوجی پر چلنے والی اشیاء دو ہزار تیرہ تک صارفین کو دستیاب ہو سکیں گی۔

یہ ٹیکنالوجی معذور افراد کو کمپیوٹر چلانے میں مدد فراہم کرنے کے لیے تیار کی گئی تھی لیکن اس ٹیکنالوجی کے سینسرز اور سافٹ ویئرز بہت مہنگے ہونے کی وجہ سے یہ کمپیوٹرز عام نہیں ہو سکے ہیں۔

اس ٹی وی کی خاص بات یہ ہے کہ اسے چلانے کے لیے آپ کو ریموٹ کنٹرول کی ضرورت نہیں رہے گی بلکہ آپ اپنی نظروں سے ہی ریموٹ کنٹرول کا کام لے سکیں گے۔

چینل بدلنے کے لیے ٹی وی اسکرین کے اوپر یا نیچے موجود مخصوص نشانات پر نظر بھر کے دیکھنا اور پلک جھپکنا ہی کافی ہوگا۔

یہ ٹیکنالوجی ابھی آزمائشی نمونے کی صورت میں پیش کی گئی ہے اور اس میں مسائل پیش آ سکتے ہیں لیکن یہ بات اپنی جگہ ہے کہ اس میں یہ صلاحیت موجود ہے کہ یہ روایتی ریمورٹ کنٹرول کا متبادل بن سکے۔

مارکیٹ میں میسر سمارٹ ٹی وی ہاتھ اور آواز کے اشارے پر چلنے کے متبادل پیش کرتے ہیں لیکن ان کا حقیقی دنیا میں کام کرنا بعض اوقات اتفاقی ہو جاتا ہے۔

ٹوبی کمپنی کی تیار کردہ ٹیکنالوجی ٹی وی کے سیٹ میں نہیں رکھی جائے گی بلکہ ٹی وی اور دیکھنے والے کے درمیان ایک جگہ پر رکھے جانے والے ایک سنسر میں ہو گی جو دیکھنے والے کی آنکھ کی حرکات پر نظر رکھے گا۔

دیکھنے والے کی آنکھ کا گھورنا اور چھپکنا اسے ٹی وی کی تصویر کو اوپر نیچے، منتخب یا مختلف چیزوں میں سے انتخاب کرنے کا اشارہ کرے گا۔

"ٹوبی کی نظر بھر کر دیکھنے سے عمل کرنے والی ٹیکنالوجی کٹ کمپنیوں اور ایسے افراد کے لیے مہیا ہے جو اس انقلابی ٹیکنالوجی کو استعمال کر کے مختلف کام کرنے کے سافٹ وئر اور ایپلیکیشنز بنا سکتے ہیں۔ یہ ٹیکنالوجی مستقبل کی کمپیوٹنگ اور صارفین کے لیے بنائی جانے والی اشیاء میں بہت بڑا حصہ لے گی۔"

کمپنی ٹوبی کے منتظم اعلیٰ ہنرک ایسکلسن

دیکھنے والا ٹی وی کی سطح پر دیے گئے مختلف نشانات کو دیکھ کر مختلف کام کرے گا۔

اس آلے کو ہر دیکھنے والے کی آنکھ کے حساب سے متعین کیا جائے گا اور عینک لگا کر دیکھنے سے اس کی کارکردگی میں کمی آئے گی۔

اس ٹیکنالوجی کو بنانے والی کمپنی ٹوبی کے منتظم اعلیٰ ہنرک ایسکلسن نے دعوت دیتے ہوئے کہا کہ ’ٹوبی کی نظر بھر کر دیکھنے سے عمل کرنے والی ٹیکنالوجی کٹ کمپنیوں اور ایسے افراد کے لیے مہیا ہے جو اس انقلابی ٹیکنالوجی کو استعمال کر کے مختلف کام کرنے کے سافٹ وئر اور ایپلیکیشنز بنا سکتے ہیں۔ یہ ٹیکنالوجی مستقبل کی کمپیوٹنگ اور صارفین کے لیے بنائی جانے والی اشیاء میں بہت بڑا حصہ لے گی‘۔

چین کی کمپیوٹر بنانے والی کمپنی لینووو نے ایک ایسا آزمائشی لیپ ٹاپ بنایا ہے جو کہ آنکھ کی حرکت سے ایک صفحے کو اوپر نیچے حرکت دیتا ہے۔

ٹوبی آنکھ کی مدد سے چلنے والی ٹیکنالوجی بھی تیار کر رہی ہے جو کہ معلومات کو گاڑی کی ونڈ سکرین پر دکھائے گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔