دنیا کی تیز ترین دوربین

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 5 اکتوبر 2012 ,‭ 11:22 GMT 16:22 PST
آسٹریلیا میں خلائی دوربین

آسٹریلیا کے صحرا میں دنیا کی سب سے تیز ترین ریڈیائی دوربین لگائی گئی ہے

آسٹریلیا نے دنیا کی تیز ترین دوربین بنائی ہے جس کے ذریعے بیرونی خلاء کا سروے کیا جائے گا اور ستاروں کی پیدائش اور دور دراز کہکشاؤں کا پتا لگایا جائے گا۔

مغربی آسٹریلیا میں آسٹریلین سکوائر کلومیٹر ایرے پاتھ فائنڈر (ایسکاپ) نے چھتیس اینٹینے لگائے ہیں جس میں سے ہر ایک کا قطر چالیس فٹ ہے۔

پندرہ کروڑ پچاس لاکھ امریکی ڈالر کی لاگت سے بننے والی یہ دوربین جمعہ سے ریڈیائی تصاویر اکٹھا کرنا شروع کر دے گی۔

ایسکاپ دنیا کے سب سے بڑے ریڈیائی دوربین کے پراجیکٹ کا حصہ ہے۔

یہ دوربین مغربی آسٹریلیا کی صحرا میں مرچیسن ریڈیو آسٹرونومی آْبزرویٹری میں لگائی گئی ہے۔

اس دوربین کی مدد سے آسمان کو دوسری دوربینوں کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے دیکھا جا سکے گا۔ اس کے دور دراز علاقے میں لگانے کا مقصد بھی یہی ہے کہ اس پر انسانوں کی طرف سے بنائے گئے ریڈیو سگنلز کم سے کم اثر انداز ہوں۔

سائنسدانوں کا خیال ہے کہ اس دوربین کی مدد سے بہت زیادہ معلومات اکٹھا کی جا سکیں گی۔ اس میں سے ایک پراجیکٹ بلیک ہولز کو تلاش کرنا بھی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔