فالج سے دماغ کو بچانے والی نئی دوا

آخری وقت اشاعت:  پير 8 اکتوبر 2012 ,‭ 09:29 GMT 14:29 PST
دماغ

فالج میں دماغ کے اندر رگ پھٹنے سے خون اکٹھا ہو جاتا ہے جس سے خلیوں کو آکسیجن نہیں ملتی۔

امریکہ اور کینیڈا کے ڈاکٹروں نے کہا ہے کہ ایک دوا کو فالج کے نقصان دہ اثرات کو روکنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

طبی رسالے ’لینسٹ نیورولوجی‘ میں شائع ہونے والے تجزیے میں بتایا گیا ہے کہ این اے ون نامی یہ دوا استعمال میں محفوظ ہے۔

ایک سو پچاسی مریضوں پر کی جانے والے آزمائشی تجزیے میں اس بات کا عندیہ دیا گیا ہے کہ جن مریضوں کو یہ دوا دی گئی ان کے دماغ کے کم حصے فالج سے متاثر ہوئے۔

فالج کی تنظیم ’سٹروک ایسوسی ایشن‘ نے کہا کہ یہ نتائج امید افزا ہیں لیکن ابھی مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

بندروں پر کیے جانے والے تجربات سے پتا چلا ہے کہ جب فالج کی وجہ سے دماغ کے خلیے آکسیجن سے محروم ہو گئے تو این اے ون نے انھیں مرنے نہیں دیا۔

یہ مختصر ٹرائل امریکہ اور کینیڈا کے چودہ ہسپتالوں میں کیا گیا۔

جن مریضوں نے اس میں حصہ لیا ان کے دماغ میں ایک رگ کے ورم (اینیورِزم) کا آپریشن کیا گیا تھا۔ایسی رگ کے پھٹنے کے امکانات ہوتے ہیں جس سے مریض فالج کا شکار ہو سکتے ہیں۔

بانوے مریضوں کو انجیکشن کے ذریعے دوا دی گئی جب کہ ترانوے کو صرف نمکین پانی دیا گیا۔ڈاکٹروں نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ این اے ون محفوظ ہے کیوں کہ صرف دو مریضوں میں دوا کے مضر اثرات دیکھنے میں آئے۔

دماغ کے سکین سے پتا چلا کہ جن مریضوں کو دوا دی گئی تھی ان کے دماغوں کے کم حصوں کو نقصان پہنچا۔

"’ہم ایسے کسی بھی علاج کا خیر مقدم کرتے ہیں جو دماغ کے خلیوں کو فالج کے حملے کے بعد نقصان پہنچنے سے بچائے رکھے۔ یہ دوا ممکنہ طور پر امید افزا ہے لیکن ابھی بہت زیادہ تحقیق کی ضرورت ہے۔‘"

پروفیسر مارکو کیسٹ

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اس تحقیق سے اس بات کی شہادت ملتی ہے دماغ کے خلیوں کو بچایا جا سکتا ہے، لیکن انھوں نے ساتھ میں یہ بھی کہا کہ دوا کے اثرات کا جائزہ لینے کے لیے ’زیادہ بڑے جائزے کی ضرورت ہے‘ جس میں دوا کو زیادہ مریضوں پر آزمایا گیا ہو۔

ہیلسنکی یونیورسٹی کے پروفیسر مارکو کیسٹ کہتے ہیں ’فالج کی سب سے بڑی وجہ عمر ہے۔ چونکہ دنیا کی آبادی کی عمر میں اضافہ ہو رہا ہے اس لیے فالج کا بوجھ بھی بڑھتا جائے گا۔‘

سٹروک ایسوسی ایشن کے ڈاکٹر پیٹر کولمین نے کہا ’ہم ایسے کسی بھی علاج کا خیر مقدم کرتے ہیں جو دماغ کے خلیوں کو فالج کے حملے کے بعد نقصان پہنچنے سے بچائے رکھے۔ یہ دوا ممکنہ طور پر امید افزا ہے لیکن ابھی بہت زیادہ تحقیق کی ضرورت ہے۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔