کیوروسٹی:’مریخ کی مٹی ہوائی کی مٹی جیسی‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 31 اکتوبر 2012 ,‭ 14:38 GMT 19:38 PST

کیوریوسٹی مریخ پر اگست میں اتاری گئی تھی جس نے اب تک مریخ پر اہم تجربات کیے ہیں۔

ناسا کی جانب سے مریخ پر بھیجے گئے روبوٹ کیوروسٹی نے مریخ کی زمین کے نمونے بھجوائے ہیں جن کی جانچ پڑتال کے بعد پتا چلا ہے کہ یہ نمونے امریکی جزیرے ہوائی پر ملنے والی مٹی سے ملتے جلتے ہیں۔

کیوروسٹی نے مٹی کے ان نمونوں کو اچھی طرح چھان کر ان کی بناوٹ جاننے کے لیے ان پر ایکس ریز پھینکیں جس عمل کو ’چن من‘ تجربہ کا نام دیا گیا ہے۔

ان نمونوں سے مریخ کی جغرافیائی تاریخ کے بارے میں اہم معلومات مل سکیں گی۔

ان نمونوں کی اکثریت ’بیسیلٹک‘ طرح کے آتش فشانی مادے سے بنی ہے جیسا کہ جزیرہ ہوائی پر دیکھی جاتی ہے۔

ان نمونوں میں مریخ کی سطح پر آنے والے بڑے طوفانوں کی مٹی سے لے کر مقامی سطح پر موجود مٹی تک کے نمونے ہیں۔

کیوروسٹی کو مریخ کی سطح پر اس سال چھ اگست کو اتارا گیا تھا۔

کیوروسٹی اب تک اپنے اترنے کے مقام سے چار سو اسی میٹر کا فاصلہ طے کر کے ایک ایسے مقام پر آ چکی ہے جہاں تین مختلف طرح کی جغرافیائی سطحیں ملتی ہیں۔

اس تجربے کے دوران مٹی کے نمونے پہلے حاصل کیے جاتے ہیں اور ان میں سے ایک سو پچاس مائیکرو میٹر سے چھوٹے نمونے علیحدہ کیے جاتے ہیں جن کی موٹائی تقریباً دو انسانی بالوں جتنی ہوتی ہے۔

اس کے بعد یہ ان مٹی کے نمونوں کو اچھی طرح ہلا کر چھانتا ہے تاکہ اندازہ لگایا جا سکے کہ وہ اڑ کر پھیلتے کیسے ہیں۔

"قدیم چٹانوں جیسا کہ کونگلرمیٹ میں پانی کے گزرنے کے شواہد ہیں جبکہ تازہ مٹی کے نمونوں میں پانی سے محدود تعلق کے شواہد بھی ملے ہیں۔"

’چن من‘ تجربہ کے محقق ڈاکٹر ڈیوڈ بِش

ان نمونوں کا جائزہ لینے والی ٹیم کا کہنا ہے کہ ان نمونوں میں فیلڈسپر، اولیوائن اور پائروکسین مادوں کے اجزا شامل ہیں۔

’چن من‘ تجربہ کے محقق ڈاکٹر ڈیوڈ بِش نے کہا مریخ پر پائی جانے والی ’قدیم چٹانوں جیسا کہ کونگلرمیٹ میں پانی کے گزرنے کے شواہد ہیں جبکہ تازہ مٹی کے نمونوں میں پانی سے محدود تعلق کے شواہد بھی ملے ہیں‘۔

ان تجربات کے بعد اگلا مرحلہ ان مٹی کے نمونوں کو ایک اور تجربے سے گزارنا ہے جسے ’سیم‘ یا مریخ پر نمونوں کے تجزیے نامی آلے سے گزارا جائے گا۔

’سیم‘ مٹی کے نمونوں میں سے نامیاتی مرکبات کا اندازہ لگائے گا، یا ایسے مرکبات جن میں کاربن کی موجودگی ہو جن سے مریخ پر حال یا ماضی میں زندگی کے شواہد مل سکیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔