آسٹریلیا میں مکمل سورج گرہن کا نظارہ

آخری وقت اشاعت:  بدھ 14 نومبر 2012 ,‭ 12:01 GMT 17:01 PST
فائل فوٹو، سورج گرہن

سورج گرہن اس وقت وقوع پذیر ہوتا ہے جب چاند اپنے مدار میں چکر لگاتے ہوئے زمین اور سورج کے درمیان آ جاتا ہے

آسٹریلیا میں ہزاروں کی تعداد میں سیاحوں اور ماہر فلکیات نے شمالی ریاست کوئنز لینڈ میں غیر معمولی سورج گرہن کا نظارہ کیا ہے۔

سورج گرہن کی وجہ سے کوئنز لینڈ تقریباً دو منٹ تک تاریکی میں ڈوب گیا۔

ایک اندازے کے مطابق بدھ کی صبح سورج گرہن کے نظارے کو لاکھوں افراد نے براہ راست ٹی وی چینلز پر بھی دیکھا۔

اس کے علاوہ نیوزی لینڈ اور مشرقی انڈونیشیا سمیت خطے کے دیگر علاقوں میں بھی جزوی سورج گرہن متوقع ہے۔

آئندہ مکمل سورج گرہن مارچ سال دو ہزار پندرہ میں ہو گا۔

ایک مخصوص علاقے میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے کشتیوں اور گرم ہوا کے غباروں میں اس منفرد نظارے کو دیکھا۔

اس سے پہلے خدشات ظاہر کیے جا رہے تھے کہ خراب موسم کی وجہ سے سورج گرہن کا نظارہ ممکن نہیں ہو سکے گا۔ تاہم سورج گرہن شروع ہونے کے ساتھ ہی علاقے سے بادل چھٹ گئے۔

اس پر ہزاروں کی تعداد میں جمع لوگوں نے خوشی کا اظہار کیا۔

کوئنز لینڈ میں فلکیات کی ایسوسی ایشن کے رکن ٹیری کیٹل نے کہا کہ’اس سے پہلے وہ سوچ رہے تھے کہ کہ کیا ہم اسے دیکھ پائیں گے؟ اور پھر ہمیں ایک زبردست نظارہ دیکھنے کو ملا اور یہ بہت خوبصورت تھا اور جیسے ہی یہ ختم ہوا تو بادل دوبارہ آ گئے۔‘

سورج گرہن کا نظارہ کرنے والے ایک نوجوان پام کوو نے کہا کہ ’یہ بہت ہی اعلیٰ تھا، میں نے اس سے پہلے اس طرح کی چیز نہیں دیکھی۔‘

سورج گرہن شروع ہونے کے ساتھ ہی درجہ حرات میں گراؤٹ آنا شروع ہو گئی۔

ایک سیاح جیوف سکاٹ نے نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پیغام میں کہا کہ’حشرات اور پرندے خاموش ہو گئے تھے۔‘

سائنسدانوں نے سمندر میں کیمرے نصب کر رکھے تھے تاکہ مشاہدہ کیا جا سکے کہ سورج گرہن کے دوران آبی حیات کا کیا ردعمل ہوتا ہے۔

سورج گرہن کی وجہ سے بڑی تعداد میں سیاحوں نے کوئنز لینڈ کا رخ کیا اور ٹور آپریٹرز کے بقول بعض لوگوں نے تین سال پہلے ہی ایک نظارے کو دیکھنے کے لیے ہوٹلوں میں بکنگ کرا رکھی تھی جبکہ ریاست کے حکام کے مطابق سورج گرہن کو دیکھنے کے لیے پچاس ہزار کے قریب اضافی لوگوں نے علاقے کا رخ کیا۔

خیال رہے کہ سورج گرہن اس وقت وقوع پذیر ہوتا ہے جب چاند اپنے مدار میں چکر لگاتے ہوئے زمین اور سورج کے درمیان آ جاتا ہے ۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔