مریخی شہابیے کی نئی قسم کی دریافت

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 4 جنوری 2013 ,‭ 03:29 GMT 08:29 PST

یہ نیا شہابی ٹکڑا اپنی نوعیت میں الگ ہے

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ دو ہزار گیارہ میں مراکش کے صحرا سے ملنے والا چٹانی ٹکڑا دراصل ایک مریخی شہابیے کی نئی قسم ہے۔

تین سو بیس گرام وزنی اس ٹکڑے کو نارتھ ویسٹ افریقہ 7034 کا نام دیا گیا ہے۔

اس کی ہیئت اور کیمیا اسے زمین کی سطح سے حاصل کردہ تمام چیزوں سے ممتاز کرتے ہیں اور یہ ان پتھروں سے ملتا جلتا ہے جو مریخ پر پائے جاتے ہیں۔

’سائنس‘ نامی جریدے میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق یہ پتھر دو ارب سال سے زیادہ قدیم ہے جبکہ اس سے پہلے ملنے والے دیگر مریخی شہابیے دو سو سے چار سو ملین سال پرانے ہیں۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے اس تحقیقی ٹیم کے مرکزی رکن اور یونیورسٹی آف نیو میکسیکو امریکہ کے پروفیسر کارل ایگی کا کہنا ہے کہ ’جہاں یہ دیگر مریخی شہابیوں سے مماثلت رکھتا ہے وہیں کچھ جگہ پر یہ ان سے واضح طور پر مختلف بھی ہے۔‘

اس وقت دنیا بھر میں سو سے زائد مریخی شہابیے موجود ہیں۔ یہ سب ٹکڑے مریخ سے کسی شہابِ ثاقب کے ٹکراؤ کے نتیجے میں اکھڑے تھے اور لاکھوں برس خلاء میں سفر کرنے کے بعد زمین پر آ گرے تھے۔

ان میں سے بیشتر شہابیوں کی دریافت اتفاقیہ طور پر ہوئی ہے لیکن دنیا میں لوگ باقاعدہ طور پر انہیں تلاش کرتے ہیں اور ایسے ٹکڑے دسیوں ہزاروں ڈالر میں فروخت ہوتے ہیں۔

مریخ سے آنے والے شہابیوں کی بنیادی طور پر تین درجہ بندیاں کی جاتی ہیں جنہیں شیرگوٹی، نخلا اور چیزگنی کہا جاتا ہے تاہم پروفیسر ایگی کے مطابق یہ نیا شہابی ٹکڑا اپنی نوعیت میں الگ ہے۔

ان کے مطابق یہ اپنی خاصیتوں میں چاند سے زمین پر گرنے یا لائے جانے والے پتھروں سے تو ملتا جلتا ہے لیکن مریخی پتھروں سے مماثلت نہیں رکھتا۔

سائنسدانوں کے مطابق اس پتھر میں پوٹاشیم اور سوڈیم جیسے عناصر موجود ہیں جو مریخ کی کھدائی کے دوران تو ملے ہیں لیکن وہاں سے زمین پرگرنے والے شہابیوں میں نہیں پائے جاتے۔

محققین کی ٹیم نے دیگر مریخی شہابیوں کے مقابلے میں اس میں پانی کی دس گنا زیادہ مقدار پائی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ یہ ممکنہ طور پر اس ماحول کا نتیجہ ہے جہاں یہ چٹان معرضِ وجود میں آئی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔