فحش ویڈیو کے ’اجرا‘ پر ٹوئٹر کی معذرت

آخری وقت اشاعت:  پير 28 جنوری 2013 ,‭ 18:01 GMT 23:01 PST

ٹوئٹر کے مطابق وہ اس غلطی پر صارفین سے معذرت کرتے ہیں

مائیکرو بلاگنگ کی معروف ویب سائٹ ٹوئٹر کے صارفین نے ویب سائٹ کی نئی سروس ’وائن‘ پر فحش ویڈیو جاری ہونے پر غصے کا اظہار کیا ہے۔

ٹوئٹر کی نئی ویڈیو سروس ’وائن‘ پر چھ سیکنڈ دورانیے کی یہ ویڈیو ’ایڈیٹر کا انتخاب‘ کے نام سے صارفین کے ہوم پیج یعنی صفحۂ اول کے اوپری حصے میں نظر آ رہی تھی۔

ٹوئٹر پر جب اس ویڈیو کے بارے میں اطلاع پھیلی تو ٹوئٹر نے جلدی ہی اسے ہٹا دیا لیکن یہ اس کے بعد مقبول ترین میں شامل رہی۔

ٹوئٹر نے ویڈیو جاری ہونے پر صارفین سے معذرت کرتے ہوئے اسے ایک انسانی غلطی قرار دیا ہے۔

کمپنی کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ ایک انسانی غلطی کی وجہ سے بالغوں کے مواد پر مبنی ویڈیو ’ایڈیٹرز کا انتخاب‘ میں شامل ویڈیوز میں شامل ہو گئی اور غلطی کا اندازہ ہوتے ہی اس ویڈیو کو فوری طور پر ہٹا دیا گیا۔‘

خیال رہے کہ ٹوئٹر کی نئی ویڈیو سروس وائن پر بڑی تعداد میں فحش مواد کے تبادلے کے معاملے پر خاصی تنقید کی جا رہی ہے لیکن اس قسم کی ویڈیو تمام صارفین کو نظر نہیں آتی ہیں اور صرف ایسا مواد تلاش کرنے والا اسے دیکھ پاتا ہے۔

لیکن صفحۂ اول پر ایڈیٹر کے انتخاب میں اس ویڈیو کو شامل کیے جانے سے وائن سروس پر آنے والے صارفین کو سکرین پر نمایاں طور پر نظر آئی۔

ایک صارف ٹیلر وینکلمیئر نے لکھا کہ’میں نے اس لنک کو اس لیے کھولا کیونکہ میرے خیال میں وارننگ ایک مذاق ہے، لیکن جب میں نے اس دیکھا تو شدید غصہ آیا اور کوئی مجھے براہ مہربانی یہ بتائے گا کہ اس کو میری فیڈ سے کیسے نکالنا ہے‘۔

خیال رہے کہ ٹوئٹر نے گزشتہ دنوں ہی نئی ویڈیو سروس’وائن‘ شروع کی تھی جس میں صارفین اپنی ٹوئٹس میں چھ سیکنڈ کی ویڈیو بھی اپ لوڈ کر سکتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔