ڈالفن نے مل کر بیمار ساتھی کی مدد کی

آخری وقت اشاعت:  منگل 29 جنوری 2013 ,‭ 13:47 GMT 18:47 PST
ڈالفِن

اس واقعے میں دیکھا گیا کہ ڈالفنوں نے مل کر اپنے بیمار ساتھی کو ساتھ رکھنے کی کوشش کی

سائنسدانوں کے مطابق یہ دیکھا گیا ہے کہ ڈالفن مل کر اپنے ایک بیمار اور مرنے والے ساتھی کی مدد کرنے کی کوشش میں مصروف رہی ہیں۔

یہ پہلا واقعہ ہے جس میں دیکھا گیا ہو کہ ڈالفن کا کوئی گروہ اس طرح مل کر موت کے قریب اپنے کسی ساتھی کو بچانے کی کوشش کرتے رہے۔

کوریا میں کام کرنے والے سائنسدانوں نے یہ واقعہ جنوبی کوریا کےساحل کے قریب دیکھا۔

انہوں نے دیکھا کہ پانچ ڈالفن نے اپنے ایک علیل ساتھی کو اپنے اوپر رکھ کر ساتھ رکھنے کی کوشش کی حتیٰ کہ انہوں نے اس کی موت کے بعد بھی اس کی لاش کو اپنے ساتھ رکھا۔

جنوبی کوریا میں السان میں سٹیسئین تحقیقاتی ادارے کے کیوم جے پارک اور ان کی ٹیم نے یہ واقعہ دیکھا جس میں دس کے قریب ڈالفن نے اپنے ساتھی کی جان بچانے کی کوشش کی۔

"ڈالفن اور وھیل جیسے جانوروں پر تحقیق میں دیکھا گیا ہے کہ وہ اپنوں کی مدد تو کرتے ہیں لیکن یہ پہلی مرتبہ ہے کہ ان کی اس قسم کی اجتماعی کوشش دیکھی گئی ہو"

ڈالفن مچھلی کی کارروائیوں کی اس مثال کی تفصیل بحری حیاتیات کے سائنسی جریدے ’مرین میمل سائنس‘ میں شائع کی گئی ہے۔

ڈالفن اور وھیل جیسے جانوروں پر تحقیق میں دیکھا گیا ہے کہ وہ اپنوں کی مدد تو کرتے ہیں لیکن یہ پہلی مرتبہ ہے کہ اس کی اس قسم کی اجتماعی کوشش دیکھی گئی ہو۔

اس تازہ واقعے میں تقریباً بارہ ڈالفن ساتھ ساتھ تیرتے دکھائی دیے جن میں سے ایک کی حالت خراب معلوم ہو رہی تھی۔

اس بیمار ڈالفن کو اٹھانے کے لیے پانچ ڈالفن نے ایک قسم کی کشتی بنائی جس پر اسے لے کر جاتے ہوئے دکھایا گیا۔ پھر پانچ اور ڈالفن نے یہ ہی کیا اور باری باری یہ گروپ اس طرح سے اس ڈالفن کو اپنے ساتھ رکھتے گئے۔ پھر ایسا معلوم ہوا کہ یہ بیمار ڈالفن مر چکی ہے، لیکن پھر بھی اس کے ساتھوں نے اس کا ساتھ نہیں چھوڑا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔