فیس بک کے منافع میں تیزی سے کمی

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 31 جنوری 2013 ,‭ 12:05 GMT 17:05 PST

فیس بک کے بازارِ حصص میں شیئرز کی قدر میں بھی چھ فیصد کی کمی آئی ہے اور اس میں مزید کمی کی توقع ہے

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک کے مطابق تحقیق اور ترقی پر اخراجات میں اضافے کے وجہ سے اس کے منافع میں تیزی سے کمی آئی ہے۔

فیس بک نے سال دو ہزار بارہ کی آخری سہ ماہی میں چھ کروڑ چالیس لاکھ ڈالر کا منافع کمایا جبکہ گزشتہ سال اسی سہ ماہی میں اس کا منافع تیس کروڑ بیس لاکھ ڈالر تھا۔

اس اعلان کے بعد نیویارک کے بازارِ حصص میں فیس بک کے شیئرز میں چھ فیصد کمی ہوئی ہے۔

فیس بک نے گزشتہ سال مئی میں بازارِ حصص نیسڈیک میں اپنے حصص فروخت کے لیے پیش کیے تھے اور اس وقت ایک شیئر کی مالیت اڑتیس ڈالر تھی جو ستمبر میں نصف رہ گئی تھی۔

اس کے بعد اس کی قدر میں بہتری آئی تھی اور بدھ کو حصص بازار بند ہونے کے بعد اس کی مالیت اکتیس ڈالر پر تھی اور اب حصص میں کمی سے لگتا ہے کہ جمعرات کو جب شیئر بازار دوبارہ کھلے گا تو اس کی مالیت میں مزید کمی آئے گی۔

ایک تجزیہ کار ارون کیسلر کے مطابق موبائل پلیٹ فام سے آمدن کی توقعات تھوڑی زیادہ تھیں۔

’مجموعی طور پر یہ ایک اچھی سہ ماہی تھی لیکن ہو سکتا ہے کہ کمپنی کو اس سہ ماہی سے زیادہ توقعات ہوں اور اس سے ہی نقصان ہوا ہو۔‘

اشتہارات سے ایک اعشاریہ تین ارب ڈالر کی آمدن ہوئی جو ایک سال پہلے اکتالیس فیصد زیادہ تھی۔

فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کے مطابق سال دو ہزار بارہ میں ان کی ویب سائٹ ایک ارب سے زائد لوگوں کو ایک دوسرے سے جوڑتی ہے اور یہ ایک موبائل کمپنی بن گئی ہے۔

انہوں کہا ہے کہ’ ہم سال دو ہزار تیرہ میں ایک اچھی رفتار سے داخل ہوں گے اور اپنے مشن کے حصول کے لیے سرمایہ کاری جاری رکھیں گے اور زیادہ مضبوط اور بیش قمیت کمپنی بنیں گے۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔