’پھیپھڑوں کا کینسر چھاتی کے کینسر سے آگے‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 13 فروری 2013 ,‭ 12:47 GMT 17:47 PST

ماہرین کا کہنا ہے کہ یورپ کی خواتین میں کینسر کے باعث ہونے والی اموات کی سب سے بڑی وجہ چھاتی کا کینسر نہیں بلکہ پھیپھڑوں کا کینسر بن سکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق خواتین میں پھیپھڑوں کے کینسر کی شرح بڑھنے کی وجہ ایسی خواتین کی جانب سے سنہ انیس سو ساٹھ اور ستر کی دہائیوں میں تمباکو نوشی شروع کرنا تھا۔

ماہرین کے مطابق یورپی خواتین میں پھیپڑوں کے کینسر سے ہلاک ہونے والی کی شرح آئندہ آنے والے سالوں میں مزید بڑھے گی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ سنہ دو ہزار تیرہ میں بیاسی ہزار چھ سو چالیس خواتین پھیپھڑوں کے کینسر جبکہ اٹھاسی ہزار آٹھ سو چھیاسی خواتین چھاتی کے کینسر کے باعث ہلاک ہوں گی۔

پروفیسر کارلو اور ان کے ساتھیوں کے مطابق سنہ دو ہزار پندرہ تک پھیپھڑوں کے کینسر کے باعث ہلاک ہونے والی خواتین کی تعداد بڑھ جائے گی۔

پھیپھڑوں کے کینسر کی وجہ

ماہرین کے مطابق خواتین میں پھیپھڑوں کے کینسر کی شرح بڑھنے کی وجہ ایسی خواتین کی جانب سے سنہ انیس سو ساٹھ اور ستر کی دہائیوں میں تمباکو نوشی شروع کرنا تھا۔

پروفیسر کارلو کی ٹیم نے فرانس، جرمنی، اٹلی، پولینڈ، سپین اور برطانیہ میں پھیپھڑوں، آنت، معدہ اور چھاتی کے کینسر کے باعث ہلاک ہونے والی خواتین کی شرح کا مشاہدہ کیا۔

اعداد و شمار کے مطابق جیسے جیسے لوگوں کی عمر میں اضافہ ہو رہا ہے، ان میں کینسر کا مرض بڑھتا جا رہا ہے۔

ماہرین کے مطابق اگرچہ کینسر کے باعث مجموعی طور پر ہلاکتوں میں کمی آئی ہے اس کے باوجود یورپی یونین کے تمام ممالک کی خواتین میں پھیپھڑوں کے کینسر کے باعث مرنے کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔