مائیکرو سافٹ کو 731 ملین ڈالر کا جرمانہ

آخری وقت اشاعت:  بدھ 6 مارچ 2013 ,‭ 14:39 GMT 19:39 PST

مائیکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ پاپ اپ کی عدم شمولیت ایک تکنیکی غلطی تھی

یورپی یونین نے سافٹ ویئر بنانے والی دنیا کی سب سے بڑی کمپنی مائیکروسافٹ پر یورپی صارفین کے لیے صرف انٹرنیٹ ایکسپلورر کی تشہیر کرنے اور دیگر ویب براؤزر کو نظرانداز کرنے پر سات سو اکتیس ملین ڈالر کا جرمانہ عائد کیا ہے۔

خیال رہے کہ مائیکرو سافٹ نے یورپی یونین کی جانب سے کی جانے والی تحقیقات کے بعد ایک معاہدے کے تحت مارچ سنہ دو ہزار دس میں براؤزر کے چناؤ کے لیے چوائس سکرین پاپ اپ متعارف کروایا تھا۔

لیکن امریکی کمپنی نے فروری سنہ دو ہزار گیارہ میں سامنے آنے والے ونڈوز سیون کے اپ ڈیٹ میں یہ چیز شامل نہیں کی تھی۔

اس بارے میں مائیکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ اس پاپ اپ کی عدم شمولیت ایک تکنیکی غلطی تھی تاہم مسابقتی کمیشن کے سربراہ جوکوئن المونیا کا کہنا ہے کہ اس اقدام کی مثال نہیں ملتی۔

انٹرنیٹ کمپنیوں کا نگران ادارہ سنہ دو ہزار بارہ کی رپورٹ کے تحت مائیکرو سافٹ پر پوری دنیا سے اس کی سالانہ آمدنی کا دس فیصد جرمانہ عائد کر سکتا تھا جو سات اعشاریہ چار ملین ڈالر تک ہو سکتا تھا۔

دوسری جانب مائیکرو سافٹ کمپنی کے ایک ترجمان نے نگران ادارے کی رپورٹ کے حوالے سے کہا ہے کہ وہ تکنیکی غلطی کی پوری ذمہ داری قبول کرتے ہوئے صارفین سے معذرت خواہ ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ انہوں نے کمیشن کو اس صورتحال سے پوری طرح آگاہ کیا اور مستقبل میں اس صورتحال سے بچنے کے لیے اپنے سافٹ وئیر ڈویلپمنٹ اور دیگر پروسیس کو مضبوط بنانے کے لیے مذید اقدامات کیے تاکہ دوبارہ یہ غلطی نہ ہو۔

اس حوالے سے ایک وکیل کا کہنا ہے کہ یورپی یونین کے اس فیصلے کا مقصد دیگر کمپنیوں کو واضح پیغام دینا ہے۔

سمسنز اینڈ سمسنز نامی کمپنی کے وکیل ٹونی ووڈگیٹ کا کہنا ہے کہ یورپی کمیشن اس نوعیت کے پہلے مقدمے کے ذریعے تمام کمپنیوں کو یہ واضح پیغام دینا چاہتی ہے کہ وہ کسی بھی کمپنی کی جانب سے دی جانے والی یقین دہانیوں میں ناکامی کو برداشت نہیں کرے گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔