مریخ کی چمکدار چٹان سے سائنسدان حیران

آخری وقت اشاعت:  منگل 19 مارچ 2013 ,‭ 14:21 GMT 19:21 PST

کیوروسٹی سترہ جنوری کو ٹنٹینا نامی چٹان پر سے گزری تھی

مریخ پر بھیجی جانے والی خودکار روبوٹ گاڑی ’کیوروسٹی‘ کے پہیوں کے نیچے کچلی جانے والی ایک چٹان نے سائنسدانوں کو حیران کر دیا ہے۔

سرخ سیارے کے نام سے معروف مریخ پر پائی گئی یہ چٹان چمکدار سفید رنگ کی ہے اور اسے ’ٹنٹینا‘ کا نام دیا گیا ہے۔

چٹان کا یہ غیرمعمولی رنگ ایسے ہائیڈریٹ یا آبی خاصیت والے معدنیات کی موجودگی کا اشارہ ہے جو قدیم زمانے میں اس وقت وجود میں آئے تھے جب مریخ کی سطح پر پانی بہتا ہوگا۔

ٹنٹینا میں آبی خاصیت والی معدنیات کی نشاندہی سے اس سیارے پر ماضی میں پانی کی موجودگی کے خیال کو تقویت پہنچی ہے۔

سفید چٹان کی موجودگی کا اعلان امریکی ریاست ٹیکساس میں چاند اور سیاروں کے بارے میں چوالیسیوں سالانہ کانفرنس میں کیا گیا ہے۔

اسی کانفرنس میں یہ اعلان بھی کیا گیا روبوٹ گاڑی کے کمپیوٹر میں ایک اور مسئلہ پیدا ہوگیا ہے۔

یہ روبوٹ گاڑی مریخ کی سطح پر موجود گیل نامی گڑھے کا جائزہ لے رہی ہے اور گزشتہ ہفتے اس نے ایک چٹان میں کھدائی کر کے مٹی کے مرکبات کا سراغ لگایا تھا جن سے ظاہر ہوتا تھا کہ وہ یا تو پانی کے اندر وجود میں آئے تھے یا پھر پانی ان پر خاصا اثرانداز ہوا تھا۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے اس دریافت کے نتیجے میں اس خیال میں ایک قدم مزید پیش رفت ہوئی ہے جس کے مطابق سرخ سیارہ کبھی زندگی کے لیے سازگار تھا۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سائنسدان جان گراٹزنگر کا کہنا تھا کہ کیوروسٹی مریخ پر جس جگہ اتری ہے وہ اس سیارے پر دریافت ہونے والا پہلا ماحول ہے جہاں زندگی پنپ سکتی تھی۔

امریکی خلائی ادارے ناسا کی روبوٹ گاڑی اگست 2012 میں مریخ پر اتاری گئی تھی اور وہ اس وقت اپنے مقامِ آغاز سے نصف کلومیٹر دور تک پہنچ چکی ہے۔

اپنے تحقیقی عمل کے دوران سترہ جنوری کو ٹنٹینا نامی چٹان پر سے گزری تھی جس سے وہ ٹوٹ گئی تھی اور اس کے اندر کا سفید رنگ دکھائی دیا تھا۔

کیلیفورنیا انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کی میلیسا رائس کا کہنا ہے کہ ’یہ گیل گڑھے سے ملنے والی چمکدار ترین اور سب سے سفید چیزوں میں سے ایک ہے۔‘

ان کے مطابق ’کیمرے نے جو دیکھا ہے وہ چٹانوں کے معدنی ڈھانچے میں موجود پانی ہے۔ یہ پانی ماضی کے آبی دور کا ہے اور اب آبی خاصیت والی معدنیات میں محفوظ ہے۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔