دلائی لامہ کی ویب سائٹ پر سائبر حملہ

Image caption چین دلائی لامہ کو علیحدگی پسند کے طور پر ایک خطرہ سمجھتا ہے

تبت کی جلاوطن حکومت کی چینی زبان میں ویب سائٹ ہیک اور وائرس سے متاثر ہو گئی ہے۔

تبت کی جلاوطن حکومت کے سربراہ بدھ مذہب کے پیشوا دلائی لامہ ہیں۔

کمپیوٹر سکیورٹی ایجنسی کمپنی کیسپرسکائی لیب کے ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ سی ٹی اے یعنی سینٹرل تبتی انتظامیہ کی ویب سائٹ متاثر ہو چکی ہے۔

خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ویب سائٹ میں موجود وائرس استعمال کنندہ کی جاسوسی کے لیے استعمال ہو سکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق تبت ڈاٹ نیٹ ویب سائٹ کو نشانہ بنانے والے ہیکرز اس سے پہلے جنوبی ایشیا میں حقوق انسانی کی تنطیموں کی ویب سائٹس کو بھی ہیک کر چکے ہیں۔

انٹرنیٹ کمپنی کیسپرسکائی کے مطابق سی ٹی اے کی ویب سائٹ کو ہیکرز کے اسی گروپ نے متعدد بار نشانہ بنایا ہے لیکن اس سے پہلے دراندازیوں کو بروقت ٹھیک کر دیا گیا تھا۔

کیسپرسکائی کے محقق کرٹ بھومگاٹنر کے مطابق ہیکرز نے اس حملے میں ’ واٹرننگ ہول اٹیک‘ نامی تکنیک کا استعمال کیا اور اس سے انھیں کمپیوٹرز تک رسائی حاصل ہو جاتی ہے اور وہ وہاں سے اہم فائلز حاصل کر سکتے ہیں اور سسٹم پر سے ختم بھی کر سکتے ہیں۔

ہیکر حملے سے متاثرہ ویب سائٹ تبت کی جلا وطن انتظامیہ کی سرکاری ویب سائٹ ہے اور انتظامیہ اس وقت شمالی بھارت کے علاقے دھرم شالا میں مقیم ہے۔

بدھ مذہب کے چودہویں پیشوا دلائی لامہ سنہ 1959 میں چین کے خلاف ایک ناکام بغاوت کے بعد تبت سے نکل گئے تھے اور اس کے بعد انہوں نے جلاوطن حکومت قائم کی تھی۔ چین دلائی لامہ کو علیحدگی پسند کے طور پر ایک خطرہ سمجھتا ہے۔

اسی بارے میں