فیس بک صارفین کو معاوضہ ادا کرے گی

Image caption ایک اندازے کے مطابق 150 ملین فیس بک صارفین کے نام اور تصاویر تشہیری کہانیوں میں استعمال کیے گئے

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک اپنے 6,14,000 صارفین کو ان کی مرضی کے بغیر ان کی ذاتی تفصیلات شائع کرنے پر 20 ملین ڈالر معاوضہ ادا کرے گی۔

ان صارفین کی تفصیلات گزشتہ سال فیس بک کی ویب سائٹ پر ایک اشتہار کے ذریعے سامنے آئی تھیں۔

ایک اندازے کے مطابق 150 ملین فیس بک صارفین کے نام اور تصاویر تشہیری کہانیوں میں استعمال کیے گئے تاہم اُن میں سے صرف اُن صارفین کو معاوضہ دیا جائے گا جنھوں نے اس حوالے سے کی جانے والی ای میل کا جواب دیا۔

دوسری جانب فیس بک نے بی بی سی کی جانب سے کی جانے والی درخواست پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

امریکہ کی ایک عدالت نے منگل کو ان ادائیگیوں کی منظوری دی۔

فیس بک کے صارفین کا موقف ہے کہ ان کی تفصیلات کو تشہیری کہانیوں کے پروگرام کے تحت مصنوعات کی ترویج کے لیے استعمال کیا گیا اور اس کے لیے انھیں کوئی معاوضہ نہیں دیا گیا۔

امریکہ کے جج رچرڈ بورگ نے اس بات کو تسلیم کیا ہے کہ 15 ڈالر فی صارف ادائیگی نسبتاً بہت کم ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ اس بات کا ثبوت نہیں ملا کہ فیس بک نے کسی قانون کی خلاف ورزی کی ہے۔

جج کے مطابق فیس بک کے صارفین ابھی اس بات کو ثابت نہیں کر سکے کہ انھیں کوئی نقصان پہنچایا گیا ہے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ ایک اندازے کے مطابق فیس بک نے اپنے صارفین کی تفصیلات شائع کر کے تشیہری کہانیوں کے ذریعے 73 ملین ڈالر کا منافح حاصل کیا۔

اسی بارے میں