’تابکار ذرات کئی دہائیوں تک فضا میں رہتے ہیں‘

Image caption سرد جنگ کے دور میں جب جوہری ہتھیاروں کی دوڑ چل رہی تھی تو دنیا بھر میں یہ ہتھیار تیار کیے جا رہے تھے

ایک نئی تحقیق میں معلوم ہوا ہے کہ تابکار ذرات جوہری تجربات کے کئی دہائیوں بعد تک فضا کی اونچی سطح میں معلق رہتے ہیں۔

سائنس دانوں کا خیال تھا کہ زمین کی سطح کے قریب جوہری ذرات کی مقدار وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ انتہائی کم ہو جاتی ہے، تاہم تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ پلوٹونیئم اور سیزیئم کی چند اقسام اب بھی حیران کن حد تک زیادہ مقدار میں موجود ہیں۔

یہ تحقیق نیچر کمیونیکیشنز نامی سائنسی جریدے میں شائع کی گئی ہیں۔

سوئٹزرلینڈ میں لوزان یونیورسٹی ہسپتال کے انسٹی ٹیوٹ آف ریڈی ایشن فزکس سے منسلک اس تحقیق کے مرکزی مصنف ڈاکٹر ہوزے کورکو الواردو کا کہنا ہے کہ ’جوہری دھماکے کے چند ہی سالوں میں زیادہ تر تابکار ذرات ختم ہو جاتے ہیں تاہم ان میں سے کچھ فضا کی انتہائی اونچی سطح میں کئی دہائیوں بلکہ کئی صدیوں تک رہ سکتے ہیں۔‘

تاہم ان کا کہنا تھا کہ ان کی تعداد اس قدر کم ہوتی ہے کہ ان سے انسانی صحت کو کوئی خطرہ نہیں ہوتا۔

سرد جنگ کے دور میں جب جوہری ہتھیاروں کی دوڑ چل رہی تھی تو دنیا بھر میں ان ہتھیاروں کے تجربات جاری تھے، اور اب 50 سال بعد بھی ان کا ورثہ باقی ہے۔

اگرچہ جوہری دھماکے ابتدائی طور پر چیزوں کو اوپر کی جانب پھینکتے ہیں، سائنس دانوں کا خیال تھا کہ اب تابکار ذرات کچھ ہی عرصے تک باقی رہیں گے۔

فضا کی نچلی سطح جو کہ کرہِ ارض سے منسلک ہے، اس سطح میں یہ ذرات قدرے جلدی ختم ہو جاتے ہیں کیونکہ بارشوں اور زمین کی کشش کی وجہ سے فضا میں معلق نہیں رہتے۔

تاہم اس تحقیق کے محققین کا خیال ہے کہ زمین سے 10 تا 50 کلومیٹر اونچائی پر فضا کی اونچی سطح میں کچھ ذرات پھنس جاتے ہیں۔

ڈاکٹر الواردو کا کہنا ہے کہ ’فضا کی اونچی اور نچلی سطح میں ان ذرات کے تناسب میں ہمیں 1000 سے 1500 گنا فرق ملا ہے۔‘

اگرچہ ٹیم نے یہ تحقیق سوئٹزرلینڈ کی فضا میں کی ہے، تاہم ان کا اندازہ ہے کہ دنیا بھر میں یہی رجحان پایا جائے گا۔

سائنس دانوں کو یہ بھی معلوم ہوا کہ یہ ذرات آتش فشانوں کے پھٹنے اور دیگر قدرتی واقعات کی وجہ سے حرکت بھی کرتے ہیں۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ انھیں اس معاملے کے طویل تر اثرات کے بارے میں تو معلوم نہیں تاہم ان کا کہنا ہے کہ اس بات پر زور دیا جانا چاہیے کہ یہ ماحول کے لیے مضر نہیں۔

اسی بارے میں