تنخواہ ایک ڈالر

تصویر کے کاپی رائٹ GETTY IMAGES
Image caption مارک زکربرگ کی بنیادی تنخواہ 2013 میں ایک ڈالر تک پہنچ گئی تھی

سوشل میڈیا ویب سائٹ فیس بک کے بانی مارک زكربرگ نے گذشتہ سال حصص کی فروخت کے نتیجے میں 3.3 ارب ڈالر کی کمائی کی ہے۔

فیس بک کے حصص کی عام لوگوں کے لیے دستیابی کی وجہ سے مارک زکربرگ کے پاس اسٹاک کی فراہمی کے اختیارات ختم ہو گئے تھے۔

زكربرگ کو انکم ٹیکس کے بل کی ادائیگی میں مدد کے لیے چھ کروڑ حصص دیے گئے تھے۔

سال 2013 میں ان کی بنیادی تنخواہ ایک ڈالر تک پہنچ گئی تھی جو دیگر ٹیکنالوجی کمپنیوں کے سربراہوں جیسا کہ گوگل کے لیری پیج اور ایپل کے سٹیو جابز کے برابر تھی۔

انہیں مجموعی طور پر گذشتہ سال 653165 ڈالر ادا کیے گئے جبکہ سال 2012 میں یہ رقم تقریباً دو کروڑ ڈالر تھی۔

فیس بک کا کہنا ہے کہ اس رقم کا بیشتر حصہ زكربرگ کے سفر کے لیے کرائے پر لیے گئے ذاتی طیاروں کے لیے ادا کیا گیا جو سیکورٹی وجوہات کی بنا پر ضروری ہے۔

فی الحال زكربرگ کے پاس فیس بک کے 4263 کروڑ حصص ہیں جن کی بازار میں قیمت 7.25 ارب ڈالر ہے۔

گذشتہ سال فیس بک کے حصص کی قیمت میں دگنے سے زیادہ اضافہ ہوا اور موبائل اشتہارات کی فروخت سے کمپنی کی اندازے سے بہتر کمائی ہوئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption شیرل سینڈ برگ فیس بک کی چیف آپریٹنگ آفیسر ہیں

دوسری جانب امریکی ریگولیٹرز کے پاس جمع شدہ اعداد و شمار سے معلوم ہوا ہے کہ فیس بک کی چیف آپریٹنگ آفیسر شیرل سینڈبرگ نے اپنے حصص کا بڑا حصہ فروخت کر دیا ہے۔

اخبار فنانشل ٹائمز کے تجزیے کے مطاب ان کے پاس چار کروڑ دس لاکھ حصص تھے جب کمپنی کو سٹاک مارکیٹ میں 2012 میں درج کروایا گیا تھا مگر اب تک وہ دو کروڑ 60 لاکھ حصص فروخت کر چکی ہیں۔ اس سے قبل وہ کہہ چکی ہیں کہ انہوں نے یہ حصص اپنے ٹیکس کا بل ادا کرنے کے لیے بیچے تھے۔

ان کے موجودہ حصص 17 ملین ہیں جن کی مالیت ایک ارب ڈالر کے قریب ہیں۔

اسی بارے میں