’کم عمری میں بچے سبزی پسند کرنا سیکھ سکتے ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ v
Image caption پروفیسر ہیتھرینگٹن کہتی ہے کہ ان کی تحقیق سے ان والدین کو زیادہ فائدہ ہوگا جو اپنے بچوں کو اچھی غزا کھانے کی ترغیب دینا چاہتے ہیں

ایک تازہ تحقیق کے مطابق اگر بچوں کو دو سال کی عمر تک پہنچنے سے پہلے سبزی دی جائے تو وہ نئی سبزیاں کھانا پسند کرنا سیکھ سکتے ہیں۔

برطانیہ میں لیڈز یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق چڑ چڑے بچوں کی بھی سبزی کھانے میں حوصہ آفزائی کی سکتی ہے اگر انھیں پانچ سے دس دفعہ سبزی پیش کی جائے۔

تحقیق کے دوران برطانیہ، فرانس اور ڈنمارک سے تعلق رکھنے والے 332 بچوں کو جن کی عمریں چار سے 38 مہینوں کے درمیان تھی، کھانے کے لیے آرچوک پوری نامی خاص قسم کی سبزی دی گئی۔

ہر پانچ میں سے ایک بچے نے سبزی کی پوری پلیٹ کھا لی جبکہ 40 فیصد بچوں نے اس سبزی کو پسند کرنا سیکھا۔

اس مطالعہ میں مشہور مفروضے کو رد کیا گیا جس کے مطابق بچوں کے کھانے کے لیے سبزی کا ذائقہ تبدیل کرنا چاہیے۔

تحقیق کے دوران کم عمر بچوں نے بہ نسبت زیادہ عمر کے بچوں کے زیادہ سبزی کھائی۔

لیڈز یونیورسٹی میں انسٹیٹیوٹ آف سائیکلوجیکل سائنسس سے تعلق رکھنے والے اور اس تحقیق کے لکھاری پروفیسر ہیتھرینگٹن نے کہا کہ’اگر بچے دو سال سے کم عمر ہوں تو نئی سبزیاں کھائیں گے کیونکہ وہ نئی تجربات کرنے کی طرف راغب ہوتے ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’دو سال کے بعد بچے نئی چیزیں آزمانا پسند نہیں کرتے اور اس خوراک کو بھی مسترد کرنا شروع کر دیتے جو انھیں پہلے پسند تھا۔‘

تحقیق کے دوران زیادہ تر یعنی 40 فیصد بچے سیکھنے والے تھے اور جنھوں نے وقت کے ساتھ ساتھ زیادی سبزی کھائی۔

پروفیسر ہیتھرینگٹن کہتی ہے کہ ان کی تحقیق سے ان والدین کو زیادہ فائدہ ہوگا جو اپنے بچوں کو اچھی غزا کھانے کی ترغیب دینا چاہتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ’اگر آپ اپنے بچوں کی سبزی کھانے میں حوصلہ افزائی کرنا چاہتے ہیں تو اس بات کو یقینی بنائیں کہ انھیں کم عمری اکثر سبزی دیا کریں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’اگر آپ کا بچہ چڑ چڑا ہے یا سبزی پسند نہیں کرتا، ہماری مطالعہ سے پتہ چلا ہے کہ پانچ سے دس دفعہ انھیں سبزی پیش کرنے سے فرق پڑ جائے گا۔‘

اسی بارے میں