’ڈیٹا محفوظ رکھنا ہے تو فون تباہ کرنا ہوگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ 1
Image caption کمپنی کے مطابق انھوں نے اس عمل کے لیے کوئی مخصوص سافٹ ویئر استعمال نہیں کیا

چیک ریپبلک کی ایک سکیورٹی کمپنی نے ’فیکٹری ری سیٹ‘ یعنی مکمل طور پر غیر استعمال شدہ حالت میں لائے گئے فونز میں سے بھی لوگوں کی ذاتی تصاویر نکالی ہیں۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ ان تصاویر میں برہنہ سیلفیز (صارفین کی اپنی تصاویر) بھی شامل ہیں۔

ایسواسٹ نامی اس کمپنی کا کہنا ہے کہ انھوں نے اس کام کے لیے صرف وہ فورینزک ٹولز استعمال کیے ہیں جو عام مارکیٹ میں میسر ہیں۔ اس کام کے لیے انھوں نے ای بے سے پرانے فونز خریدے۔

تصاویر کے علاوہ کمپنی ای میل، ٹیکسٹ پیغامات اور گوگل کی سرچز بھی نکالی لی ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اپنے ڈیٹا کو مکمل طور پر محفوظ رکھنے کا واحد طریقہ اپنے پرانے فون کو تباہ کرنا ہے۔

بیشتر سمارٹ فونز میں فیکٹری ریسیٹ کی آپشن ہوتی ہے جس کا مقصد فون کو مکمل طور پر صاف کر دینا اور اسے ایسا بنا دینا ہوتا ہے جیسا کہ وہ فیکٹری سے نکلتے وقت تھا۔

تاہم ایسواسٹ نے دریافت کیا ہے کہ کچھ پرانے سمارٹ فونز میں اس آپشن سے فون میں موجود فائلز کی انڈیکس غائب ہو جاتی ہے مگر ڈیٹا وہیں رہتا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ مارکیٹ میں آسانی سے میسر سافٹ ویئر کی مدد سے تصاویر، ای میلز ٹیکسٹ پیغامات اور دیگر معلومات حاصل کی جا سکتی ہیں۔

کمپنی کا دعویٰ ہے کہ 20 فونز سے نکالی گئی 40،000 تصاویر میں سے 750 میں خواتین کو کپڑے اتارنے کے مختلف مراحل میں دیکھا جاسکتا ہے جبکہ 250 میں مرد حضرات برہنہ حالت میں دیکھے جا سکتے ہیں۔

اس کےعلاوہ 1500 فیملی فوٹوز، ایک ہزار گوگل سرچز، 750 ای میل اور 250 کانٹیکٹ انفارمیشن بھی نکالے گئے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ آپ کو اپنے اینڈروئڈ فون کو فروخت کرتے وقت صرف ڈیٹا ڈلیٹ کرنا کافی نہیں بلکہ آپ کو اپنی فائلز کے اوپر کچھ دیگر فائلز لگانا ہوں گی تاکہ وہ مکمل طور پر تباہ ہو جائیں۔

کمپنی نے یہ واضح نہیں کیا کہ کیا تمام 20 فونز سے معلومات حاصل کی گئیں یا نہیں۔

اسی بارے میں