عالمی خلائی مرکز پر پہلی روسی خاتون خلا باز

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ۔۔۔یلنا سراؤا نے مشن پر روانگی سے قبل سات سال تک تربیت حاصل کی

روس نے پہلی بار ایک خاتون خلا باز کو بین الاقوامی خلائی سٹیشن پر بھیجا ہے۔

38 سالہ یلنا سراؤا بین لاقوامی خلائی مرکز پر روس اور امریکہ کے خلائی مشن کا حصہ ہیں۔

خلائی جہاز سویوز کے ذریعے یلنا سراؤا کے ساتھ ایک روسی اور ایک امریکی خلاباز قزاقستان کے بیکانور خلائی مرکز سے روانہ ہوئے ہیں۔

یلنا سراؤا خلا میں جانے والی چوتھی روسی خاتون خلا باز ہیں لیکن بین الاقوامی خلائی سٹیشن پر جانے والی پہلی روسی خاتون ہیں۔

یلنا سراؤا نے خلائی مشین پر روانگی سے پہلے سات سال تک تربیت حاصل کی اور وہ خلائی سٹیشن پر چھ ماہ گزاریں گی۔

یلنا سراؤا سے مشن پر روانگی سے قبل ایک اخبار کانفرنس میں ان سے سوالات پوچھے گئے کہ وہ خلائی سٹیشن پر اپنے بالوں کی دیکھ بھال کیسے کریں گی۔

یلنا سراؤا کے مطابق: ’بین الاقوامی خلائی سٹیشن پر جانے والی پہلی روسی خاتون ہوں گی اور میں تربیت فراہم کرنے والے اور سیکھانے والوں لوگوں کو سامنے رکھتے ہوئے بھرپور ذمہ داری محسوس کرتی ہوں اور میں انھیں بتانا چاہتی ہوں کہ آپ کو شرمندہ نہیں ہونے دیں گے۔‘

یلنا سراؤا سے اخباری کانفرس میں یہ بھی پوچھا گیا کہچھ ماہ کی عدم موجودگی میں ان کی گیارہ سالہ بیٹی کیسے گزارہ کرے گی تو اس پر انھوں نے کہا ہے کہ یہ اس کی ذمہ داری ہو گی۔

اس سے پہلے بین الاقوامی خلائی مرکز پر آخری بار 2013 میں امریکی خاتون خلا باز گئی تھی اور انھوں نے وہاں چھ ماہ گزارے تھے۔

روس دنیا کا پہلا ملک ہے کہ جس نے پہلی بار 1963 میں خاتون خلا باز ویلنٹینا ٹریسکووا کو خلا میں بھیجا تھا۔

اسی بارے میں