آئی فون 6 خم تو ہوتا ہے لیکن کبھی کبھی: ایپل

تصویر کے کاپی رائٹ macromours
Image caption دنیا بھر سے آنے والی میڈیا رپورٹوں کے مطابق آئی فون 6 استعمال کرنے والے کئی افراد نے شکایت کی تھی کہ ان کی فون پتلون کی جیب میں پڑے پڑے مڑ جاتے ہیں

آئی فون بنانے والی امریکی ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے نئے آئی فون کے خم ہونے کی شکایات پر تنقید کا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ عام استعمال سے ایسا شاذ و نادر ہی ہوتا ہے۔

دنیا بھر سے آنے والی میڈیا رپورٹوں کے مطابق آئی فون 6 استعمال کرنے والے کئی افراد نے شکایت کی تھی کہ ان کی فون پتلون کی جیب میں پڑے پڑے مڑ جاتے ہیں۔

ایپل کی کئی حریف کمپنیوں نے ان دعووں کی بڑھ چڑھ کر تشہیر کی تھی۔

ایپل نے کہا کہ اسے نو صارفین کی جانب سے شکایات موصول ہوئی ہیں کہ ان کے آئی فون 6 پلس خم ہو گئے ہیں۔

ایک بیان میں کمپنی نے کہا کہ ان فونز کا خول ’اینوڈائزڈ ایلومینیئم سے تیار کیا گیا ہے، جسے مضبوط تر بنانے کے لیے اسے مخصوص عمل سے گزارا گیا ہے۔ اس کے علاوہ اسے مزید مضبوط بنانے کے لیے فون کے اندر سٹین لیس سٹیل اور ٹائٹینیئم بھی استعمال کیے گئے ہیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا ہے: ’ہم نے اعلیٰ معیار کے مادے استعمال کیے ہیں جنھیں ان کی مضبوطی اور پائیداری کی وجہ سے چنا ہے۔ ہم فون بنانے کے دوران تمام مراحل کی سختی سے جانچ پڑتال کرتے رہتے ہیں۔‘

بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ’آئی فون 6 اور 6 پلس روزمرہ استعمال کے تمام تقاضے پورے کرتے ہیں۔ اور عام استعمال کے دوران آئی فون کے مڑ جانے کے واقعات بہت شاذ و نادر ہیں۔ فروخت کے پہلے چھ دنوں میں صرف نو صارفین نے اس کی شکایت کی ہے۔‘

خیال رہے کہ اطلاعات کے مطابق ایپل نے آئی فون 6 کی فروخت شروع ہونے کے پہلے تین دنوں میں ایک کروڑ سے زائد فون فروخت کیے تھے۔

مڑ ہوئے آئی فون کی تصاویر نشر ہونے کے بعد ایپل کے حصص میں کمی واقع ہو گئی تھی۔

اسی بارے میں