فیس بک میسینجر استعمال کرنے والوں کی تعداد 50 کروڑ

Image caption فیس بک موبائل فون پر میسجنگ کی خدمات فراہم کرانے والی سرفہرست سروس بننے کی خواہاں ہے

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک کا کہنا ہے کہ ان کی نئی پیغام رسانی کی خدمات فراہم کرنے والی میسینجر سروس اب دنیا بھر میں 50 کروڑ صارفین تک پہنچ چکی ہے۔

کمپنی نے کہا ہے کہ ان کے علیحدہ میسنجر کے صارفین اپریل میں 20 کروڑ سے ڈھائی گنا بڑھ کر 50 کروڑ سے زیادہ ہو گئے ہیں۔

فیس بک نے جب یہ کہا تھا کہ اس کے صارفین پر اس نئی ایپ کو ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے دباؤ ڈالا جائے گا جس کے ذریعے وہ اپنے دوستوں کو ذاتی قسم کے یا نجی پیغام بھیج سکتے ہیں تو اس کے خلاف آواز اٹھی تھی۔

یہ ایپ جولائی سنہ 2011 میں لانچ کی گئی تھی اور پھر اس کو ڈاؤن لوڈ کرنے پر زور دیا گیا تھا۔

فیس بک کی مصنوعات کے ڈائرکٹر پیٹر مارٹینازی نے جمعرات کو ایک بلاگ میں کہا: ’لوگ ایک دوسرے سے کس طرح منسلک رہتے ہیں، اس مقصد کی خاطر میسیجنگ بہت اہم ہے۔ 2011 میں جب سے ہم نے میسینجر لانچ کیا ہے اس کے بعد ہم لوگوں کو آپس میں رابطہ رکھنے کا تیز تر اور بھرپور طریقہ فراہم کرنے کے لیے بہت پرجوش ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فیس بک نے گذشتہ ماہ واٹس ایپ کو 22 ارب ڈالر میں خریدنے کا معاہدہ کیا

اپریل میں فیس بک نے اپنے صارفین سے کہا تھا کہ ویڈیو بھیجنے، مفت فون کال کرنے اور چیٹ کرنے کے لیے انھیں ایک علیحدہ ایپ ڈاؤن لوڈ کرنا پڑے گی۔

صارفین نے فیس بک کے اس فیصلے پر تنقید کی تھی اور ایپ سٹور پر اس کو پسند کی جانے والی ریٹنگ ڈیڑھ سٹار تھی۔

مارٹینازی نے کہا کہ ’لوگوں کی تنقید کے باوجود ہم اپنے میسنجر کی صلاحیت اور رفتار میں بہتری کی کوشش کرتے رہے۔ اس میں بہتری کے لیے ہر دوسرے ہفتے اپ ڈیٹس کیے جاتے تھے۔‘

دریں اثنا موبائل پر سرِفہرست میسیجنگ سروس بننے کی کوشش میں فیس بک نے پیغام رسانی کی خدمات فراہم کرنے والی کمپنی واٹس ایپ کو گذشتہ ماہ 22 ارب ڈالر میں خریدنے کے لیے معاملہ طے کر لیا ہے۔

اسی بارے میں