ایپل کا پہلا کمپیوٹر اندازے سے کم قیمت پر نیلام

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایپل ون کا ماڈل نیلام گھر کرسٹیز میں نیلامی کے لیے پیش کیا گیا جو اب تک چالو حالت میں ہے

ٹیکنالوجی کمپنی ایپل کمپیوٹر کا بنائے ہوئے پہلے کمپیوٹر ’ایپل ون‘ کا قابلِ استعمال حالت میں ایک ماڈل تین لاکھ 65 ہزار امریکی ڈالر میں نیلام ہو گیا ہے۔

اس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ اسے ایپل کے شریک بانی سٹیو جابز نے 1976 میں کیلی فورنیا کے ایک گیراج سے ذاتی طور پر فروخت کیا تھا۔

ایک اندازے کے مطابق اس وقت دنیا میں 50 کے قریب ایپل ون کے ماڈل چالو حالت میں موجود ہیں۔

باوجود اس کے کہ یہ بہت نایاب کمپیوٹر ہے، یہ کرسٹیز نیلام گھر کے اندازے یعنی چار سے چھ لاکھ ڈالر سے بہت کم قیمت پر فروخت ہوا۔

اکتوبر میں ہنری فورڈ تنظیم نے ایک ایسے ہی کمپیوٹر کے لیے نو لاکھ پانچ ہزار امریکی ڈالر ادا کیے تھے۔

اصل ایپل کمپیوٹر کو، جسے اب ایپل ون کہا جاتا ہے، سٹیو ووزنیاک نامی ایک انجینیئر نے سٹیو جابز کے ساتھ مل کر 1970 میں ہاتھ سے بنایا تھا۔

جب یہ مشین نئی تھی اُن دنوں یہ 666 ڈالر میں فروخت ہوئی تھی۔

اس مشین کے بنانے کے لیے سرمایہ فراہم کرنے کی خاطر سٹیو جابز نے اپنی فوکس ویگن بیچ دی تھی، جبکہ ووزنیاک نے اپنا کیلکولیٹر 500 ڈالر میں فروخت کیا تھا۔

اسی بارے میں