ایپل کی جانب سے پانچ ارب ڈالر کے بانڈز کا اجرا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ایپل نے گذشتہ سہ ماہی میں 18 ارب ڈالر کا منافع کمایا ہے

دنیا کی سب سے بڑی کمپنیوں میں سے ایک کمپنی ایپل نے پانچ ارب ڈالر کے بانڈز جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایپل کے مطابق اس پیسے کا بڑا حصہ کمپنی اپنے ہی حصص کو بازارِ حصص سے واپس خریدنے میں استعمال کرے گی۔

ایپل کی نقد رقم کا تقریباً 90 فیصد حصہ بیرونی ممالک میں جمع ہے۔

ایپل کے بانڈز کو ڈوئچے بینک اور گولڈ مین سیکس مارکیٹ کر رہے ہیں۔

کمپنی نے گذشتہ سہ ماہی میں 18 ارب ڈالر کے ریکارڈ منافع کے باوجود بانڈ جاری کرنے کا فیصلہ اس لیے بھی کیا ہے کہ کیونکہ اسے حصص کے مالکان کو 130 ارب ڈالر واپس کرنے ہیں۔

تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ تین سال میں یہ رقم 200 ارب ڈالر بھی ہو سکتی ہے۔

اب جاری ہونے والے بانڈ میں سے کچھ پانچ سال میں چکا دیے جائیں گے جبکہ کچھ کو ادا کرنے میں تیس سال سے بھی زیادہ وقت لگے گا۔

کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی موڈي نے ایپل کے بانڈ کو ٹرپل اے ون کی درجہ بندی دی ہے۔

اونچی درجہ بندی اور کمپنی کی ساکھ کی وجہ سے بانڈز کے بازار میں زیادہ سے زیادہ لوگوں کے متوجہ ہونے کا امکان ہے۔

اسی بارے میں