’لوگ ایسی غلطی کرنے سے باز رہیں‘

Image caption 19 سالہ بلیک برن نے اپنی تصویر ان لائن پر جاری کی تاکہ نامعلوم ادویہ کے استعمال کے ’تباہ کن‘ اثرات کی نشاندہی ہو سکے

منشیات کے خلاف شعور اجاگر کرنے کے لیے انگلینڈ کے ایک نوجوان نے اپنی کوما کی تصویر جاری کی ہے۔

نوجوان جورڈن بلیک برن ایک موسیقی کے فیسٹیول میں منشیات استعمال کرنے کی وجہ سے اس قدر نازک حالت میں چلے گئے کہ انھیں کوما میں رکھا گیا۔

جورڈن بلیک برن 31 جولائی کوکینڈل کالنگ فیسٹیول میں ’منشیات کا زیادہ استعمال کرنے‘ کی وجہ سے بیمار پڑ گئے جبکہ ان کے دوست کرسٹیئن پے کی موت واقع ہوگئي۔

چند گہرے دوستوں کے اس گروپ نے تقریب کے دوران تین مختلف قسم کی گولیوں کا استعمال کیا تھا۔

19 سالہ بلیک برن نے اپنی تصویر ان لائن پر جاری کی تاکہ نامعلوم ادویہ کے استعمال کے ’تباہ کن‘ اثرات کی نشاندہی ہو سکے۔

ان کی ماں ایلیسن ٹرن بل نے کہا کہ وہ چاہتی ہیں کہ دوسرے لوگوں کو ایسی غلطی کرنے سے باز رکھیں۔

انھوں نے کہا: ’مجھے یوں لگا کہ میری دنیا ختم ہونے والی اور یہ واقعی ختم ہو رہی تھی۔ مجھے کرسٹیئن کے بار ے میں پتہ چل چکا تھا اور مجھے یہ خیال آيا کہ اب اس کی باری ہے، اب ہم اسے کھونے والے ہیں۔‘

Image caption میلوم کے 18 سالہ مسٹر پے کو ہسپتال میں مردہ قرار دیا گيا

’وہ صرف بیداری پیدا کرنا چاہتا ہے۔ وہ ہسپتال میں اپنے بستر پر پڑا ہے اس نے میری طرف دیکھا اور کہا، ’مجھے ایک نئی زندگی ملی ہے، ہے نا؟‘ میں نے کہا ہاں۔

’جسمانی طور پر وہ درست ہے لیکن وہ ابھی بھی تھکا ہوا ہے۔ اس کا جسم عجیب قسم کی اذیت سے گزرا ہے۔ ذہنی طور پر وہ ٹھیک ہونے کی کوشش کررہا ہے لیکن اسے بچ جانے کا احساس جرم رہے گا۔‘

انگلینڈ میں کمبریا کے ہیورگ میں رہنے والے بلیک برن نے کمبرلینڈ ہسپتال میں تین راتیں گزاریں۔

میلوم کے 18 سالہ مسٹر پے کو ہسپتال میں مردہ قرار دیا گيا۔ ان کے اہل خانہ نے انھیں ’پرمذاق شخص‘ کے طور پر یاد کیا جو دوسروں کا بہت خیال رکھتا تھا۔

خیال رہے کہ تقریب میں شرکت کرنے والوں میں مجموعی طور پر 14 افراد کو علاج کے لیے ہسپتال میں داخل کیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ چار لوگوں کو منشیات فراہم کرنے کے شبہے میں گرفتار کیا گیا ہے لیکن اب وہ ضمانت پر رہا ہیں۔

اسی بارے میں