’ایئر ڈراپ‘ سے بیہودہ تصاویر بھیجے جانے کی تحقیقات

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پولیس کے مطابق ماضی میں ان کے پاس بلیو ٹوتھ سے غیر مناسب مواد کی منتقلی کے معاملات تو آئے ہیں لیکن ایئر ڈراپ کا ایسا استعمال پہلی بار ہوا ہے

لندن میں پولیس ایک خاتون کو دورانِ سفر فون پر بیہودہ تصاویر بھیجے جانے کے واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے اور اس کا کہنا ہے کہ یہ ان کے نوٹس میں لایا جانے والا ’سائبر فلیشنگ‘ کا پہلا واقعہ ہے۔

یہ واقعہ جنوبی لندن میں ایک خاتون لورین سمتھ کے ساتھ پیش آیا جب ٹرین پر سفر کے دوران کسی نے انھیں آئی فون پر ایپل کے ایئر ڈراپ فنکشن کی مدد سے عضوِ تناسل کی تصویر بھیجی۔

34 سالہ لورین کا کہنا ہے کہ انھوں نے’سائبر فلیشنگ‘ کے اس واقعے کے بارے میں برٹش ٹرانسپورٹ پولیس کو مطلع کیا ہے۔

برٹش ٹرانسپورٹ پولیس کے سپرنٹنڈنٹ سارجنٹ گِل مرے کا کہنا ہے کہ ان کے لیے یہ ایک نیا واقعہ ہے اور اگر کسی اور فرد کے ساتھ ایسا واقعہ پیش آ چکا ہے تو وہ اس کی اطلاع دے۔

لورین سمتھ نے اس واقعے کے بارے میں بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میرا ایئر ڈراپ چل رہا تھا کیونکہ میں اس سے کسی کو تصاویر بھیج رہی تھی۔ اچانک میری سکرین پر یہ تصویر نمودار ہوئی تو میں بھونچکا رہ گئی۔‘

لورین کے مطابق جب انھوں نے اس تصویر کو قبول کرنے سے انکار کیا تو ایک اور ویسی ہی تصویر انھیں بھیجی گئی جس سے انھیں لگا کہ یہ تصویر بھیجنے والا ان کے آس پاس ہی موجود ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’یہ جان کر میں پریشان ہوئی۔ یہ ایک انتہائی ناخوشگوار چیز تھی جسے میری سکرین پر زبردستی بھیجا گیا۔‘

Image caption ’یہ جان کر میں پریشان ہوئی۔ یہ ایک انتہائی ناخوشگوار چیز تھی جسے میری سکرین پر زبردستی بھیجا گیا‘

انھوں نے یہ بھی کہا میں یہ سوچ کر بھی فکرمند ہو گئی کہ اگر میری جگہ یہاں کوئی بچہ ہوتا تو کیا ہوتا۔ ایئر ڈراپ پر میرا نام لورین ہی ہے سو بھیجنے والا جانتا تھا کہ وہ یہ تصویر کسی خاتون کو بھیج رہا ہے۔

اس واقعے کے بعد برٹش ٹرانسپورٹ پولیس نے ایک مہم کا آغاز کیا ہے جس میں عوام سے اس قسم کے واقعات کی اطلاع دینے کو کہا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ چونکہ لورین نے اس تصویر کو قبول نہیں کیا اس لیے ان کے پاس اس معاملے کو آگے بڑھانے کے لیے کوئی ثبوت نہیں اور وہ ان کی اطلاع کو ریکارڈ کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔

سپرنٹنڈنٹ گل مرے کے مطابق ماضی میں ان کے پاس بلیو ٹوتھ سے غیر مناسب مواد کی منتقلی کے معاملات تو آئے ہیں لیکن ایئر ڈراپ کا یہ استعمال پہلی بار ہوا ہے۔

ایئر ڈراپ ایپل کی مصنوعات کے لیے مخصوص فنکشن ہے جس میں وائی فائی اور بلیو ٹوتھ کی مدد سے قریب موجود دیگر ڈیوائسز سے رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

ویسے تو ’ڈیفالٹ سیٹنگز‘ کے تحت اس فنکشن کی مدد سے صرف فون استعمال کرنے والے فرد کی رابطہ فہرست میں موجود نمبروں سے رابطہ کیا جا سکتا ہے تاہم سیٹنگز تبدیل کر کے اجنبی افراد بھی اس رابطے کا حصہ بن سکتے ہیں۔

ایپل کی جانب سے اس واقعے پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔